ضلع ملیر کی زمینوں‌ پر قبضے، پولیس اہلکار ملوث نکلے، سنسنی خیز انکشاف

ضلع ملیر میں پولیس اہلکار ہی سرکاری اراضی پر قبضے میں ملوث نکلے

کراچی کے ضلع ملیر میں شرافی گوٹھ تھانے میں غیرقانونی قانون تعمیرات میں ملوث اہلکاروں اور لینڈ مافیا کے سرغنہ کے خلاف اہلے محلہ نے درخواست جمع کرادی۔ اس سے قبل بھی لینڈ مافیا کے سرغنہ کے خلاف زمینوں پر قبضوں کے حوالے سے متعدد مقدمہ درج ہوچکے ہیں۔

درخواست کے متن کے مطابق پولیس اہلکار، عادل، یاسر اور معظم لینڈ مافیا کے سرغنہ انور کے ساتھ مل کر ملیر ندی بند مرتضیٰ چورنگی شارع الطاف کے قریب مانسہرہ کالونی ایف ایریا جاننے والی کچی سڑک پر ندی کے حفاظتی بند کو کاٹ کر غیر قانونی طور پر تعمیر کر رہے ہیں۔ اہلیان مانسہرہ کالونی نے ملوث پولیس اہلکار اور سرغنہ کے خلاف قانونی کارروائی اور غیر قانونی تعمیرات کو مسمار کرنے کے لیے زمہ داری افسران سے اپیل کردی۔


نوٹ: آپ اپنی خبریں، پریس ریلیز ہمیں ای میل zaraye.news@gmail.com پر ارسال کرسکتے ہیں، علاوہ ازیں آپ ہمیں اپنی تحاریر / آرٹیکل اور بلاگز / تحاریر / کہانیاں اور مختصر کہانیاں بھی ای میل کرسکتے ہیں۔ آپ کی بھیجی گئی ای میل کو جگہ دی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: