کراچی میں بڑھتی مہنگائی اور سرکاری افسران کی رشوت خوری، ایم کیو ایم پاکستان کی انکشافات سے بھرپور پریس کانفرنس

کراچی میں بڑھتی مہنگائی اور سرکاری افسران کی رشوت خوری، ایم کیو ایم پاکستان کی انکشافات سے بھرپور پریس کانفرنس

کراچی: متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کے اراکین اسمبلی نے انکشاف کیا ہے کہ شہر قائد میں تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کے بیٹرز مہنگی اشیا فروخت کرنے والوں سے پیسہ لے رہے ہیں، جس کی وجہ سے مہنگائی بڑھ رہی ہے۔

ایم کیو ایم کے عارضی مرکز بہادر آباد پر ایم کیو ایم کے صوبائی اراکین اسمبلی نے پریس کانفرنس کی۔ ڈپٹی کنونیئر کنور نوید جمیل کا کہنا تھا کہ آج ہم ملک مین بڑھتی ہوئی مہنگائی پر بات کرنی ہے، مہنگائی کنٹرول کرنے کے لیے صوبائی اور وفاقی حکومت کی جانب سے جو اقدامات اٹھائے جانے تھے وہ نہیں اٹھانے جارہے ہیں، صوبائی حکومت کی جانب سے قیمتوں کی ماینٹرنگ نہیں ہورہی ہے، صوبائی حکومت کے افسران ناجائز منافع خوروں سے پیسے لیکر آجاتے ہیں، اشیاء خوردونوش کی قیمت آسمان سے باتیں کررہی ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’پاکستان میں غریب آدمی کی آمدنی میں اضافہ نہیں ہورہا ہے، حکومت کی زمہہ داری ہے کہ اشیاء خوردونوش کی قمیت عوام کی پہنچ میں رکھے، 2020 سے 2021 کے، دوران لوگ بہت بے روزگار ہوئے، بے روزگاری بڑھی، آمدنی میں کمی ہوئی اور مہنگائی نے عوام کا جینا دوبھر کردیا ہے، صوبائی حکومت کا پرائس کنٹرول کا محکمہ بالکل ناکام ہے، حکومت اپنی زمہ داری کا مظاہرہ کرے اس سے پہلے کے انتشار پھیل جائے، جب بھی ڈالر کا ریٹ بڑھتا ہے مہنگائی بڑھ جاتی ہے، پیٹرول مہنگا ہوتا یے مہنگائی بڑھ جاتی یے، گزشتہ دنوں ڈالر نیچے آیا لیکن جن اشیاء کی قیمتوں میں ڈالر کی وجہ سے اضافہ ہوا تھا اس میں کمی نہیں آئی، یہ سب حکومت کی اولین زمہ داری میں شامل ہیں، سندھ کی حکومت شہری علاقوں میں رہنے والوں کو اپنا دشمن سمجھتی ہے‘۔

Posted by MQM Pakistan on Tuesday, 6 April 2021

کنور نوید جمیل نے کہا کہ ’حکومت سندھ نے متعصب افسران کو کراچی میں پوسٹ کردیا ہے، وہ افسران کورونا کے نام پر کراچی کے لوگوں پر ظلم کررہے ہیِں اور رشوت کا بازار گرم کر رہے ہیں، کورونا کا نام لیکر دوبارہ بازار اور شادی ہال بند کرنے کے احکامات دیے ہیں، سندھ میں ابھی اتنے کیسز بھی نہیں ہے، اگر بازار کا وقت کم ہوگا تو کم وقت میں زیادہ لوگ جائیں گے، حکومت کو چاہیے کہ کاروباری افراد، سے 24 گھنٹے اور سات روز کاروبار چلانے کی اپیل کریں، امریکہ میں تو حکومت بہت ریلیف دے رہی ہے، یہان پر سندھ کے شہری علاقوں میں حکومت نے ایک پیسے کا ریلیف نہیں دیا، آج کراچی کا کاروباری طبقہ اس سلسلے میں احتجاج کررہے ہیں اور ایم کیو ایم ان کے ساتھ ہے‘۔

رکن اسمبلی محمد حسین نے کہا کہ ’مہنگائی سات ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے، مار چ کے ماہ میں گھی مرغی کاگوشت سمیت ضروری اشاء مہنگی ہوئی ہیں، دیہی علاقوں سے منتخب ہونےوالے شہری علاقوں پر حکومت کرتے ہیں، دیہی علاقوں کے لوگوں کے پاس اپنی اجناس دودھ سمیت سب ان کا اپنا ہوتاہے، ادویات کی قمیتوں میں 24فِصد اضافہ ہوا ہے، ڈپٹی کمشنر کو پرائز کنٹرول ان کو دے دیا ہے، کمشنر کراچی مرغی ریٹ 155روپے ہوتا وہ دوکانوں میں 400روپے کلو مل رہا ہے ڈپٹی کمشنر کے بیٹر پیسے اکھٹے کر رہیں، سندھ میں آج ایک ہلاکت ہوئی ہے، سندھ میں کورونا بہت کم ہے، ٹی وی چینلز نے دیکھا ہے کس طرح لوگ بے روگار کر دیے ہیں‘۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: