گراں فروشی پر چھاپے، کراچی کی سب سے بڑی ہول سیل مارکیٹ احتجاجاً بند

گراں فروشی پر چھاپے، کراچی کی سب سے بڑی ہول سیل مارکیٹ احتجاجاً بند

کراچی ہول سیل گراسرز ایسوسی ایشن نے کمشنر کراچی اور شہری انتظامیہ کی جانب سے تاجروں کو ہراساں کیے جانے اور گراں فروشی کے الزام میں بھاری جرمانوں پر مارکیٹ میں احتجاج کیا اور ہول سیل مارکیٹ مقررہ وقت سے قبل بند کردی۔

ایسوسی ایشن کے صدر عبدالرؤف ابراہیم نے جمعرات کو جوڑیا بازار سمیت ڈانڈیا بازار اور تمام ہول سیل بازار بند رکھنے کا اعلان کیا ہے، عبدالرؤف ابراہیم کے مطابق شہری حکومت نے 2018 سے اجناس کی قیمتوں میں ردوبدل نہیں کیا،آخری مرتبہ اجناس کی پرائس لسٹ جون 2020 میں جاری کی گئی جس میں 2019 کے نرخ برقرار رکھے گئے، شہری انتظامیہ متعدد اجلاس کرچکی ہے لیکن پرائس لسٹ جاری نہیں کی جاتی۔

دوسری جانب پرائس مجسٹریٹ نے بدھ کو ہول سیل مارکیٹ میں کارروائی کی اور گراں فروشی کے الزام میں تاجروں پربھاری جرمانہ عائد کیے گئے جبکہ احتجاج کرنے پر دکانداروں کو ہراساں کیا گیا جس پر تاجروں میں غم و غصہ پایا جاتا ہے۔

عبدالرؤف ابراہیم نے کہا کہ تاجر تین سال پرانے نرخ پر اجناس فروخت نہیں کرسکتے اس لیے اب کاروبار بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔


نوٹ: آپ اپنی خبریں، پریس ریلیز ہمیں ای میل zaraye.news@gmail.com پر ارسال کرسکتے ہیں، علاوہ ازیں آپ ہمیں اپنی تحاریر / آرٹیکل اور بلاگز / تحاریر / کہانیاں اور مختصر کہانیاں بھی ای میل کرسکتے ہیں۔ آپ کی بھیجی گئی ای میل کو جگہ دی جائے گی۔

رمضان المبارک میں نہایت مناسب قیمت پر اپنے اشتہارات شائع کروانے کے لیے web.zaraye@gmail.com پر رابطہ کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: