کراچی، مکانات منہدم ہونے پر 60 سالہ بزرگ کی خودسوزی

کراچی، مکان کو غیر قانونی قرار دیے جانے پر 60 سالہ بزرگ کی دلبرداشتہ ہوکر خود سوزی


کراچی: شہر قائد کے علاقے فیڈرل بی ایریا بلاک 15 میں مکانات کو غیرقانونی قرار دے کر مسمار کیے جانے پر ایک شخص نے دلبرداشتہ ہوکر خودکشی کرلی۔

سپریم کورٹ کے احکامات پر فیڈرل بی ایریا بلاک 15 میں برسوں سے قائم آبادی گلشن مصطفی کو غیر قانونی قرار دے کر مسمار کرنے کا عمل گزشتہ ہفتے شروع کیا گیا۔

مکینوں نے لیز آبادی کو غیر قانونی قرار دے کر مسمار کیے جانے کے خلاف راشد منہاس روڈ پر احتجاج بھی کیا مگر نعروں کی گھن گرج پہنچ نہ سکی۔

گلشن مصطفی کو مسمار کیے جانے کے خلاف 60 سالہ شہری دودل ولدمحمد حسین نے دلبرداشتہ ہوکر احتجاجا خود پر مٹی کا تھیل چھڑک کر خود سوزی کرلی تھی۔

دودل کو زخمی حالت میں اسپتال لے جایا گیا، جہاں میں چند گھنٹوں زیر علاج رہنے کے بعد دار فانی سے کوچ لرگئے۔

دودل حسین کا نماز جنازہ آج بعد از عشا ادا کیا گیا، جس میں عوام بڑی تعداد میں شریک ہوئے جبکہ ایم کیو ایم پاکستان کی رابطہ کمیٹی کے ممبر زاہد حسین اور فیڈرل بی ایریا ٹاؤن کے ذمہ داران نے بھی شرکت کی۔

رکن رابطہ کمیٹی ایم کیوایم پاکستان زاہد منصوری نے فیڈرل بی ایریا کے جوانٹ ٹاون آرگنائزر عابد نثار بھای کے ہمراہ نماز جنازہ میں شرکت کی۔اس موقع پر اراکین ٹاون و یوسی کمیٹی اور کارکنان موجود ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: