ڈی سی ایسٹ‌ کو عہدے سے کیوں‌ ہٹایا گیا؟ بلاول بھٹو کی وزرا سے ملاقات میں‌ کیا گفتگو ہوئی، اندرونی کہانی

ڈی سی ایسٹ‌ کو عہدے سے کیوں‌ ہٹایا گیا؟ بلاول بھٹو کی وزرا سے ملاقات میں‌ کیا گفتگو ہوئی، اندرونی کہانی

ڈپٹی کمشنر ضلع شرقی (ی سی ایسٹ) محمد علی شاہ کو بلاول بھٹو کے احکامات پر عہدے سے ہٹایا گیا ہے، یوں اچانک عہدے سے ہٹائے جانے پر مختلف چہ مگوئیاں جاری ہیں۔

ذرائع کو ملنے والی غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق اج سے کچھ دن پہلے سندھ کابینہ کے کچھ وزرا کی بلاول بھٹو سے ملاقات ہوئی جس میں بلاول بھٹو نے وزرا پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے استفسار کیا کہ چیف جسٹس صاحب نے سماعت کے دوران یونس میمن کا ذکر کیوں کیا؟۔ جس کے بعد بلاول بھٹو نے محمد علی شاہ سے متعلق سوال کیا کے یہ صاحب کون ہے اور ان موصوف کی شکایات کیوں موصول ہو رہی ہے اور ان کا کردار ایتنا متنازع کیوں ہے ،،،،،اور اس متعلق بلاول بھٹو نے ضلع ایسٹ میں ہونے والی کچھ سرگرمیوں میں نسلہ ٹاور اور الادین پارک سے متعلق وزرا سے کچھ اہم اور سنجیدہ سوالات کیے۔

اس ملاقات میں بلاول بھٹو کو اگاہ کیا گیا ’کراچی میں غیر قانونی زمینوں کی الاٹ مینٹ اور بندر بانٹ میں ڈی سی ایسٹ محمد علی شاہ ملوث ہیں، آرکیٹکچر سوسائٹی سے لیکر اسکیم 33 میں 13 اور 14 ایکڑ پر کارخاتے بنانے اور سرکاری زمین پر قابضہ کروانے میں ڈی سی ایسٹ محمد علی شاہ ملوث ہیں اور اس کے علاوہ اسکیم 33 میں ایک سرکاری زمین جو کے ایک بلڈر کو غیر قانونی طور پر الاٹ کی گئی ہے‘۔ (اس زمین سے متعلق اوسی وقت بلاول بھٹو نے وزیر اعلی سندھ کو انکوائری کے احکامات جاری کیے )

جس کے بعد بلاول بھٹو نے وزرا سے کہا کے آپ اپنی بات مکمل کریں ، وزرا نے بتایا کے ان بندر بانٹ میں ڈی سی ایسٹ محمد علی شاہ سیٹھ یونس کا نام لے رہے ہیں۔ محمد علی شاہ کے مطابق وہ سیٹھ یونس کے لیے کام کر رہے ہیں ڈی سی ایسٹ کے مطابق سیٹھ یونس اور ان کے فرنٹ مین بھی زمینوں پر غیر قانونی قبضہ کروانے میں ملوث ہیں اور اب یہ معلات اتنے بڑھ گئے ہیں کے محمد علی شاہ کے فرنٹ مین سیٹھ یونس کا نام لے کر محمد علی شاہ کے لیے قبضہ کروا رہے ہیں۔

بلاول بھٹو نے اپنے وزرا سے پوچھا کے ججیز کو اس متعلق کون آگاہ کر رہا ہے ، ایک وزیر نے بات کاٹ کر کھا کے سر میرے کسی رشتے دار کے دوست نے بتایا ہے کے سی جے پاکستان کا گھر گلشن اقبال میں ہے اور ان کا تعلق بھی کراچی اور سی جے صاحب کو اکثر بعغیر پروٹوکول کے کراچی میں دیکھا گیا ہے (یہ بات سن کر بلاول بھٹو دنگ رہ گئے‘۔

مزید وزرا نے بتایا کے میڈیا رپورٹس سے متعلق ڈی سی ایسٹ محمد علی شاھ نےآرکیٹکٹ انجینئرنگ سوسائیٹی کی 102 ایکڑ کے کمرشل زمین لینڈ مافیا کو پیچ دی ہے بلڈر مافیہ رفعت الزمان کیانی سے مل کہ بدنام زمانہ بلڈر عرفان میمن اور خالد یوسفی بھی ان معاملات میں ملوث ہیں یہ تمام طر باتیں بلاول بھٹو کو وزرا کی جانب سے اگاہ کی گئی اور بلاول بھٹو نے میٹینگ ختم کی۔

محمعد علی شاہ کی معطلی کا نوٹی فکیشن کل جاری ہوا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: