نقیب اللہ قتل کیس کی اصل دستاویزات غائب

نقیب اللہ قتل کیس کی اصل دستاویزات غائب

کراچی میں مبینہ پولیس مقابلے میں جاں بحق ہونے والے نقیب اللہ کے قتل کیس کی اصل دوستاویزات غائب ہونے کا انکشاف سامنے آیا ہے۔

جنگ اخبار کی رپورٹ کے مطابق ایک روز قبل انسداد دہشت گردی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی، جس میں مدعی کے وکیل نے معزز جج کے روبرو پیش ہوکر اصل دستاویزات کھونے کا انکشاف کیا۔

دوران سماعت سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار اور ڈی ایس پی قمر سمیت دیگر ملزمان پیش ہوئے ۔ مدعی نے مقدمے کی دستاویزات کی نقول سے متعلق درخواست جمع کروادی۔ وکیل مدعی نے کہا کہ کیس کی اصل دستاویزات کھوگئی ہیں، اس لیے فوٹو کاپی کو ہی حصہ بنایا جائے۔

راؤ انوار کے خلاف بیان دینے سے قبل نقیب اللہ کے والد کو سنگین نتائج کی دھمکیاں‌

ملزمان کے وکیل نے اس پر جرح کرتے ہوئے کہا کہ یہ فوٹو کاپی دستاویزات قابل قبول نہیں ہیں، یہ دستاویزات ٹیمپر بھی کی جاسکتی ہیں۔ کیس کی سماعت کے دوران وکلاء نے دلائل مکمل کرلیے ہیں جس کے بعد عدالت نے دستاویزات سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا۔عدالت نے حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر گواہوں کو بھی پیش کیا جائے، جس کے بعد درخواست پر فیصلہ سنایا جائے گا۔ عدالت نے قتل کیس کی مزید سماعت 8 جولائی تک ملتوی کردی ہے۔

نقیب اللہ محسود کی اہلیہ مںظر عام پر آگئی، تہلکہ خیز انکشافات

اپنا تبصرہ بھیجیں: