تھر:‌ ہندو لڑکے کو ہراساں‌ کرنے والا شخص گرفتار

تھر:‌ ہندو لڑکے کو ہراساں‌ کرنے والا شخص گرفتار

آج صبح سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ایک ویڈیو جاری ہوئی جس میں ایک غیر مقامی ڈرائیور ہندو لڑکے کو ہراساں اور تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے اُن سے اللہ اکبر کہنے اور بھگوان کو گالی دینے کی ہدایت کررہا تھا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر دستیاب معلومات کے مطابق مذکورہ شخص کا تعلق رحیم یار خان سے اور نام عبدالسلام داؤد ہے، یہ تھر کول میں بطور ڈرائیور ملازمت کررہا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ویڈیو وائرل ہوئی تو ہر ذی شعور شخص نے اس رویے کی مذمت کی اور ہراساں کرنے والے شخص کو سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا۔ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سندھ حکومت نے نوٹس لیا اور ایس ایس پی بدین کو کارروائی کا حکم دیا۔

سندھ حکومت کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے بتایا کہ ملزم کو ضلع بدین کی گھوسکی پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔ صوبائی حکومت کی بروقت کارروائی پر صارفین نے بالخصوص مرتضیٰ وہاب اور بالعموم پیپلزپارٹی کے اس اقدام کی تعریف بھی کی ہے۔

سماجی رضا کار کپل دیو نے ملزم کی گرفتاری کی تصویر شیئر کرتے ہوئے مرتضیٰ وہاب کا شکریہ ادا کیا اور لکھا کہ ’ہم مل کر سندھ دھرتی اور ملک کی ترقی کے لیے کام کرتے رہیں گے‘۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: