پہلے کراچی کے ووٹر کو عزت دیں۔۔۔ تحریر سید محبوب احمد چشتی

طاقت خداکاعطیہ۔

میرے وطن کی سیاست میں مکافاتی عمل کونظرانداز کرنیوالوں کی کوئی کمی نہیں ہے، سیاست اورمنافقت کاچولی دامن کا ساتھ ہے اس صورتحال میں ہمارے پیارے سیاستدان منافقت کواپنی طرزسیاست میں شامل نہ کریں تولانے والے بھی انکو نظر اندازکردینگے ۔

مسلم لیگ (ن) کی سیاست کا جائزہ اگرفلیش بیک میں لیاجائے تویہ بات سامنے آتی ہے کہ ”ن“ لیگ نے ایم کیو ایم اورشہرقائدمیں بسنے والے مہاجروں کو بدترین اورشدیدترین ذہنی مالی وتعصبی اذیت دینے کیساتھ انکے حقوق سلب کرنیکی روایت ہردورمیں جاری رکھی، انکی طرزسیاست کابدنما پہلویہی رہاہے کہ منقسم کردو۔منتشرکردو۔گروپ بندیاں کردو۔اسکولٹکادو۔۔ وغیرہ اور اس پریہ المیہ کہ یہ کہناکہ ہم نے شہر کراچی میں امن قائم کردیاہے۔

ایک طرف اللہ تبارک تعالی جوڑ نے والوں کوپسند فرماتا ہے اور توڑنے والوں کوشیطان کاپیروکار کہا گیاہے لیکن ن لیگ کے ہر دورحکومت میں ایم کیوایم کی ڈھرے بندیاں ضرورہوئی اوراہل کراچی میں امن قائم کرنیکی سزاانتقامی سیاست کے ذریعے دی گئی۔

شہبازشریف کے اشکوں کے متعلق میں کچھ لکھنانہیں چاہتاکیونکہ اس صورتحال پر پورے کراچی کے تاثرات کیاہیں یہ سب جانتے ہیں، مسلم لیگ ن کابیا نیہ ووٹ کوعزت دو عقل وشعور سےبالاتر ہےلیکن ذہن میں مختلف اورسوالات سامنے آگئے کس کے ووٹ کوعزت دو مسلم لیگ( ن) کے ووٹ کو عزت دیں یا پورے پاکستان کے ووٹ کو عزت دیں لیکن ایک سوال یہ بھی پیدا ہوتاہے کہ جب بھی شہر قائدکی عوام نے ووٹ کو عزت دی اسکے ووٹ اورووٹرپر زمین تنگ کردی گئی۔

ووٹ کوعزت دولیکن ایم کیوایم کے ووٹر کو اذیت دویہ کیسی دوغلی تعصبی حیوانی طرز فکرکی عکاسی کرتی سیاست ہے جو اقتدار ہوس میں کہتی ہے کہ ووٹ کو عزت دو اسکے بد لے میں ہم ایم کیوایم پاکستان اور اسکے ووٹر کووہ اذیت دینگے کہ جوتاریخ بن جائے مسلم لیگ (ن) کابیانیہ ووٹ کوعزت دو ہرگزہرگزبرانہیں ہے۔

لیکن یہ سوال تو بنتا ہے جب ایم کیوایم پر نواز شریف دور حکومت میں ڈھرے بندیاں کرنے اور ایم کیوایم پاکستان کوصفحہ ہستی سے ختم کرنیکی ناکام کوشش کی گئی اس وقت یہ خیال کیوں نہیں کیا گیا؟کہ ایم کیوایم کے ووٹ اورووٹرکوکتنی عزت دینی ہے؟۔

نواز شریف دورحکومت میں شہری سندھ میں ایم کیوایم اور انکے ووٹرز کے ساتھ جتنی تذلیل کی گئی الامان الاحفیظ، اب جو نواز شریف مریم نواز شریف پریہ فارمولہ اپنا گیاتوووٹ کوعزت دوکے نعرے بلند ہوگئے۔

جب کہ (ن)لیگ نے ریاست اورریاستی اداروں کوکیاکچھ نہیں کہالیکن ایم کیوایم کیساتھ جوکچھ ہوا وہ سب کچھ ن لیگ کیساتھ ہوجاتاتوپوری مسلم لیگ (ن ) قصہ پارنیہ بن چکی ہوتی ظلم اور ظالم کا اصل مطلب ن لیگ کوکیسے ہوسکتا ہے کیونکہ کہ ظالم کواس وقت تک اپنے ظلم کااحساس نہیں ہوتاہے۔

جب تک اس پر خودظلم نہیں ہوتااور مسلم لیگ ن کوتویہ سہولت حاصل رہی ہے کہ انکے خلاف نہ توآپریشن ہو ئے اور نہ انکے کارکنان لاپتہ ہوئے اور نہ ہی ماورائے عدالت قتل ہوئے اتناسب کچھ اگربرداشت کیاتوایم کیوایم نے کیاآپ کیساتھ اگریہ سب کچھ ہوجاتاتویقین جانئیے کہ مسلم لیگ ن کانام لیوابھی کوئی نہیں ہوتا۔

ظلم اصل میں اسکوپتہ چلتا ہے جومظلوم ہواور ظلم کرنے والی مسلم لیگ (ن)شہرقائدکی عوام کی ذہنی اذیت دینے کی قرض دارہے جب تک( ن) لیگ اہلیان کراچی پرظلم اور اس پرظلم کرنیوالی سیاسی شریک جماعتوں کیساتھ کھڑی رہے گی اسوقت تک (ن) لیگ کراچی والوں کے دل میں جگہ نہیں بناسکتی ہے طاقت کے نشے میں شہرقائد کو فتح کرنے کی بجائے اگر دلوں کو فتح کرنے کی کوشش کی جاتی تو ممکن ہے کہ کچھ جگہوں سے مطلوبہ نتائج مل جائینگے گردن سے اتفاق فاؤنڈری کاسریہ نکالیں اپنے ہردورحکومت میں جو غلطیاں کی ہیں۔

معاشی طورپرشہر قائدکے بلدیاتی اداروں کوتباہ برباد کیاآکٹرائے ٹیکس ۔مردم شماری سمیت معاشی دہشت گردی کے ساتھ بغض ایم کیوایم ومہاجرمیں وہ سب کرتے ہو ئے یہ کیوں بھول گئے کہ *بقول احمدفراز*

*میں آج زد پہ اگر ہوں تو خوش گمان نہ ہو*

*چراغ سب کے بجھیں گے ہوا کسی کی نہیں*

خود پرآئی توکہناشروع کردیا ووٹ کوعزت دو ایم کیو ایم کاووٹ اورووٹرکیوں نہیں نظرآیاآپکواب کیوں ووٹ کو عزت دیں آپکواپنایہ نعرہ دوبارہ کہناہوگاکہ پنجاب کے ووٹ کو عزت دوکیونکہ پنجاب سے باہر شہری سندھ میں ایم کیوایم پاکستان کے ووٹ اورووٹرکی پامالی دو مرتبہ آپکے دور حکومت میں ہوئی ہے۔

اب اگرآپ ایم کیوایم اورمہاجروں کواپنے اس نعر ے میں شریک کرناچاہتے ہیں توتلافی توکرناہوگی ووٹ کوعزت دوکیساتھ مہاجرآپکے ساتھ کھڑاہوگا،یہاں ایم کیوایم کو بھی اپنی کی جانے غلطیوں سے سبق لینے کی بھی ضرورت ہوگی کیونکہ سامنے اگرظلم تھا تو وفاداری کی لاج رکھنا کی آپکی بھی زمہ داری بنتی تھی آپ جب تک ،طاقت اور اختیار رکھتے ہواللہ کی مخلوق پر احسان کرو اور آسانیاں پیدا کرو کیونکہ انسان کی، طاقت اور اختیار ہمیشہ باقی نہیں رہتے مگر احسان و نیکی ضرور باقی رہ جاتے ہیں طاقت خدا کی طرف سے ایک نعمت ہوتی ہے اسکو حاصل کرنے کے بعد زمینی خدا بننے والوں کا انجام دنیا دیکھتی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: