بلدیاتی انتخابات اورافواہیں

بلدیاتی انتخابات اورافواہیں

بلدیاتی انتخابات ملتوی نہیں ہوئے ، شرجیل انعام میمن

عوام افواہوں پر کان نہ دھریں ، تیاریاں جاری رکھے ۔ صوبائی وزیر اطلاعات

مخالفین کو 80 فیصد علاقوں میں امیدوار نہیں ملے ، عوام میں بدگمانی پیدا کرنے کے لیے افواہیں پھیلا رہے ہیں ۔ شرجیل انعام میمن

ریاستی اداروں کے خلاف عمران خان کی سربراہی میں گھناؤنی سازش چل رہی ہے۔ صوبائی وزیر اطلاعات

عمران خان کے چہرے سے ایمانداری اور شرافت کا ماسک جلد اترنے والا ہے ، شرجیل انعام میمن

کراچی (سٹی رپورٹر)صوبائی وزیر اطلاعات ، ٹرانسپورٹ و ماس ٹرانزٹ شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات ملتوی نہیں ہوئے ، مخالفین افواہیں پھیلا رہےہیں

ان کو 80 فی صد علاقوں میں امیدوار ہی نہیں ملے ۔ شرجیل میمن نے کہا عوام کو گمراہ کرنے کے لیے افواہیں پھیلائی جارہی ہیں ، ان پر کان نہ دھریں ۔

بلدیاتی انتخابات کی تیاریاں جاری رکھی جائیں ، جب تک عدالت کے اس ضمن میں احکامات نہیں آجاتے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے سندھ اسمبلی میڈیا کارنر پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے گذشتہ روز اداروں اور ان کے سربراہان پر تنقید کی ہے اور بالخصوص سماجی رابطوں پر ریاستی اداروں کے خلاف عمران خان کی سربراہی میں گھناؤنی سازش چل رہی ہے

انہوں نے کہا کہ عمران خان سب سے بڑا آمرانہ مائنڈ سیٹ سوچ رکھتے ہیں ، ہر کسی سے لڑائی کر کے ملک میں انارکی پھیلانہ چاہتے ہیں ۔

عمران خان اگر اتنے سچے ہیں تو کلمہ پڑھ کر قوم کو سچ بتائیں کہ کس طرح آر ٹی ایس بیٹھ گیاصوبائی وزیر نے کہا کہ عوام کا مینڈیٹ چوری کر کے عمران خان کو مصنوعی طریقے سے وزیر اعظم بنایا گیا

اور ساڑھے تین سال تک آرڈیننس کے ذریعے ان کی حکومت چلی ۔ ان کی قومی اسمبلی میں اکثریت ہی نہیں تھی ، جس کی وجہ سے آرڈیننس کا سہارا لیا گیا

اور آئین و قانون کی دھجیاں اڑائی گئی ۔ عمران خان اور ان کے حواریوں نے ساڑھے تین سال میں جتنے بھی غیر آئینی اقدامات کئے یہ ان کے لئے ڈوب مرنے کا مقام ہے

انہوں نے کہا کہ جب ادارے نیوٹرل ہوئے تو عمران خان کو یہ بات پسند نہیں آئی اور انہوں نے اداروں کے خلاف گھناؤنی سازشیں شروع کردیں,

کیونکہ ان کو اپنی پسند کے ایمپائر اپنی پسند کی فیلڈ ، اپنی پسند کا کراؤڈ چاہیے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے دور حکومت میں جس نے بھی عمران خان کے خلاف بیان دیا یا ٹاک شو میں گفتگو کی ان سب کو جیلوں میں ڈالا گیا

صوبائی وزیر نے کہا کہ ہماری ساری جماعتیں اپنے اداروں کے ساتھ کھڑی ہے اور پاکستان کی باشعور عوام عمران خان اور ان کے حواریوں کو ہرگز اجازت نہیں دے گی کہ ملک کے اہم اداروں اور ان کے سربراہان کو نشانہ بنایا جائے

ہم ایک ایک ادارے کی حفاظت کریں گے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ عمران خان کی حکومت میں بنی گالا اور لاہور سے سسٹم چلایا جا رہا تھا ۔

ایک خاتون بچاری لاہور میں سسٹم چلا رہی تھی ، حکومت ختم ہونے پر انہیں بیرون ملک فرار کروادیا گیا

اس خاتون بیچاری کو سامنے لایا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کے چہرے سے ایمانداری اور شرافت کا ماسک جلد اترنے والا ہے ، قوم کے سامنے اس شخص کی اصل حقیقت سامنے آنے والی ہے ۔

عمران خان اور ان کی بہن نے ایمنسٹی اسکیم سے فائدے اٹھائے ۔ ان کی بہن نے ٹیکس نہیں دیا۔ جس سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ سب سے بڑے چور ہیں

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بجٹ پر بحث سندھ اسمبلی میں جاری ہے، بجٹ پر تنقید کا مؤثر اور ٹھوس جواب دیا جائے گا ۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ نے آئی جی سندھ اور ایڈیشنل آئی جی کراچی کو سختی سے ہدایت دی ہیں کہ این اے 240 کے واقعات میں جو بھی ملوث ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے

چاہے اس کا تعلق کسی بھی جماعت سے ہو ، ملوث افراد کے خلاف بلا تفریق کارروائی کی جائے گی اور آئندہ آنے والے این اے 245 ضمنی انتخابات اور بلدیاتی انتخابات میں امن امان کی صورتحال خراب کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دی جائے گی۔

انہوں نے سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں سے التجا کی ہے کہ وہ اپنے کارکنان کو کنٹرول میں رکھیں پیپلز بس سروس اور اورینج لائن پر انہوں نے کہا کہ پیپلز انٹرا ڈسٹرکٹ بس سروس تقریباً تیار ہے ،

ان کا ٹیسٹ ڈرائیو مائلیج پورا ہونے والا ہے ، ایک دو روز میں آغاز ہونے والا ہے ۔ اب اس میں مزید تاخیر نہیں ہوگی ۔ جبکہ اورینج لائن کے ٹریک پر بھی بسوں کی ٹیسٹ ڈرائیو کا کل سے آغاز ہوگیا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ کراچی کے عوام کے لیے بہت بڑی خوشخبری ہے دو کمپنیوں سے ایم او یو پر بہت جلد دستخط کر رہے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں: