کامران ٹیسوری کی بطور گورنر سندھ تعیناتی پر ایم کیو ایم رہنماؤں‌ نے خاموشی توڑ‌ دی

ایم کیو ایم کے رہنماؤں  نے کامران ٹیسوری کی بطور گورنر سندھ تعیناتی پر خاموشی توڑ دی۔

واضح رہے کہ گورنر سندھ کا عہدہ عمران اسماعیل کے استعفیٰ کے بعد سے خالی تھا۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما محمد کامران خان ٹیسوری کی بطور گورنر سندھ تعیناتی کی منظوری آئین کے آڑٹیکل 101 (آئی) کے تحت دی۔

کامران ٹیسوری کی تعیناتی نے ایم کیو ایم کے ہمدردوں اور کارکنان کو بھی حیران کیا کیونکہ کل تک نسرین جلیل کو گورنر سندھ کے لیے بہترین امیدوار سمجھا جارہا تھا۔


اب ایم کیو ایم کے رہنما خواجہ اظہار الحسن اور سابق میئر کراچی و ڈپٹی کنونیئر رابطہ کمیٹی وسیم اختر نے بھی کامران ٹیسوری کی بطور گورنر تعیناتی پر خاموشی توڑ دی۔


ایم کیو ایم کے رہنماؤں کی جانب سے کامران ٹیسوری کو گورنر سندھ کی تعیناتی پر مبارک باد پیش کرتے ہوئے اُن کیلیے نیک خواہشات کا اظہار کیا گیا ہے۔

اُدھر ایم کیو ایم کے ترجمان کا کہنا ہے کہ موجودہ حکومت کےقیام سے اب تک گورنرسندھ کاعہدہ خالی تھا، ایم کیوایم نے پہلے مرحلے میں پانچ نام دیے تھے اور ان ناموں میں کوئی پیش رفت نہ ہوسکی تھی۔ ترجمان نے بتایا کہ اہم آئینی عہدہ کافی عرصےخالی رہنے پر مشاورت سے مزید دو نام وفاق کوبھیجےگئے، ایم کیوایم نے دوسرےمرحلے میں عبدالوسیم اورکامران ٹیسوری کانام وفاق کوبھیجا اور صدر مملکت نے کامران ٹیسوری کا نام بطورگورنرسندھ منظورکیا۔

ترجمان کے مطابق کامران ٹیسوری وفاق اور صوبے کے درمیان ہم آہنگی اور شہری سندھ کی محرومیوں کےازالے میں بھرپور کردار ادا کریں گے، ایم کیو ایم پاکستان کامران ٹیسوری کے گورنر سندھ بننے پرنیک خواہشات کا اظہارکرتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: