اسلام آباد میں بڑھتی ہم جنس پرستی سے نوجوانوں میں ایچ آئی وی پھیلنے لگا

اسلام آباد: (رپورٹ وقار بھٹی / دی نیوز) شہر اقتدار میں میں ایچ آئی وی پھیلنے کی شرح تشویشناک حد تک بڑھنے لگی، جس کی تصدیق وفاقی وزارت صحت نے بھی کردی ہے۔

محکمہ صحت کے حکام کے مطابق اسلام آباد میں جنوری سے اکتوبر 2022 تک 519 ایچ آئی وی پازیٹو کیس ہوئے، ان کیسز میں بیشتر نوجوان مرد ہم جنس پرستوں اور خواجہ سراؤں کی ہے۔

محکمہ صحت کے حکام نے بتایا کہ گزشتہ چند سالوں سے نوجوان ہم جنس مردوں میں ایچ آئی وی کا مرض تیزی سے پھیل رہا ہے بڑھتے مریضوں کے علاج کے لیے اسلام آباد میں پولی کلینک میں ایک نیا ایچ آئی وی ٹریٹمنٹ سینٹر قائم کر رہے ہیں۔

پمز اسپتال کے شعبہ ایچ آئی وی کی انچارج ڈاکٹر نائلہ نے بتایا کہ اس وقت اسلام آباد کے پمز اسپتال میں 4500 سے زائد ایچ آئی وی پازیٹو مریض رجسٹرڈ ہیں، جنکا علاج جاری ہے۔

ڈاکٹر نائلہ بشیر کے مطابق کووڈ کے دنوں سے نوجوان ہم جنس پرست لڑکوں اور مردوں کی بڑی تعداد ایچ آئی وی پازیٹو میں مبتلا ہو کر سامنے آ رہی ہے، نوجوان مرد ہم جنس پرستوں میں منشیات کی لت کی وجہ سے ایچ آئی وی تیزی سے پھیل رہا ہے۔

دوسری جانب نیشنل ایڈز کنٹرول پروگرام کے حکام نے انکشاف کیا کہ رواں سال اسلام آباد میں 496 ایچ آئی وی کے نئے کیس رجسٹر ہوئے ہیں، نوجوان اپنا ٹیسٹ خود کروا رہے ہیں جس کے نتیجے میں یہ شرح بڑھ رہی ہے جبکہ ایچ آئی وی کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ہنگامی اقدامات کر رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: