24 گھنٹوں کے دوران کراچی میں اسٹریٹ کرائم کی 117 وارداتیں

کراچی: گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران شہر کے 7 اضلاع میں اسٹریٹ کرائم کی 117 وارداتیں رپورٹ ہوئیں۔ 24 گھنٹوں کے دوران ہونے والی کرائم کی وارداتوں کے حوالے سے ایڈیشنل آئی جی کراچی جاوید عالم اوڈھو نے بدھ کو وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کو رپورٹ بھیجی ۔رپورٹ کے مطابق شہر میں اسٹریٹ کرائم کے 117 واقعات رونما ہوئے جن میں 44 موبائل فون/نقدی چھینی، ایک کار چوری اور پانچ کاروں سمیت 55 موٹرسائیکلیں چوری کی وارداتیں شامل ہیں۔

ڈکیتی کے دوران اسٹریٹ کرمنلز نے مزاحمت پر چارافراد کو زخمی کیا جن میں ایک شان ولد اسلم کو بوٹ بیسن ضلع جنوبی ، دوسرا دانش ولد عابد کو شاہراہ نوجہاں ضلع وسطی ، تیسرا یس آئی شکیل اور ایس آئی جاوید کو ضلع وسطی میں جبکہ چوتھے رفاقت ولد منور کو عوامی کالونی ضلع کورنگی میں نشانہ بنایا گیا۔ وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا گیا کہ پولیس نےاسٹریٹ کرمنلز/ڈاکوؤں کے ساتھ پانچ انکائوٹر کیے جس میں 13اسٹریٹ کرمنلز/ چور زخمی حالت میں گرفتار کیے گئے اور13ملزمان کو رنگے ہاتھوں پکڑا گیا۔ پولیس نے شہر بھر میں 24 گھنٹوں کے دوران 110 ملزمان کو گرفتار کیا گیا جن میں 38 اسٹریٹ کرمنلز/چور، 22 ملزمان کو غیر قانونی اسلحہ رکھنے پر، ایک بھتہ خوری ، 9 منشیات فروشی جبکہ 34دیگر جرائم میں ملوث ملزمان شامل ہیں۔

وزیراعلیٰ کو بتایا گیا کہ کراچی پولیس نے دن بھر میں 6کار لفٹرز کو گرفتار کیا۔ ایڈیشنل آئی جی کراچی نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ سرچ آپریشن کے دوران 22 غیر قانونی پستول، دو کلو گرام چرس، پانچ چھینے گئے موبائل فون، 15 مسروقہ گاڑیاں جس میں ایک کار اور 14موٹر سائیکلیں برآمد کی گئیں۔وزیراعلیٰ سندھ نے سٹی پولیس کو کومبنگ آپریشن جاری رکھنے اوراسٹریٹ کرائم کو کنٹرول میں لانے کی ہدایت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: