آئی ایم ایف معاہدے سے پہلے ہی مہنگائی کی نئی لہرآگئی

کراچی : آئی ایم ایف معاہدے سے قبل ہی مہنگائی کی نئی لہرآگئی۔اشیائے خورونوش کی بڑھتی قیمتوں نے غریب عوام کی کمرتوڑکر رکھ دی۔

سبزیاں اورپھل بھی عام آدمی کی پہنچ سے دورہونے لگے،جان بچانے والی ادویات کی قیمتوں میں بھی ہوشربااضافہ ہوگیا۔

شہری اشیائے ضروریہ کی خریداری کیلئے ماڈل بازاروں کا رخ کرتے ہے،لاہور کے ماڈل بازاروں میں سبزیوں کے ریٹ کچھ اس طرح رہے ،آلو نیا کچا چھلکا ماڈل بازار ریٹ 34 ،عام مارکیٹ 50، پیاز ماڈل بازار 152 عام مارکیٹ 180، ٹماٹر ماڈل بازار 33عام مارکیٹ 50، ادرک ماڈل بازار 530 ، عام مارکیٹ 600، لہسن دیسی ماڈل بازار 315 عام مارکیٹ 350، کھیرا ماڈل بازار 60 عام مارکیٹ 70، بند گوبھی ماڈل بازار ر 30عام مارکیٹ 40، بھنڈی ماڈل بازار 200، عام مارکیٹ 230، گھیا کدو ماڈل بازار 80، عام مارکیٹ 90، سبز مرچ ماڈل بازار 110عام مارکیٹ 120، لیموں چائنہ ماڈل بازار 76، عام مارکیٹ 90، روپے میں فروحت کئے گئے۔

شہریوں کا کہنا تھا عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہے، مہنگائی کا جن قابو میں آنے کا نام نہیں لے رہا، جوبھی حکومت آتی بڑے بڑے دعوے کرتی ہے لیکن اس پر عملدرآمد نہیں ہوتا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: