بندگاہوں پر کروڑوں روپے کا خام مال ناکارہ ہو گیا ،اپٹما

فیصل آباد: آل پاکستان ٹیکسائل ملز ایسوسی ایشن( اپٹما )ریجن فیصل آباد کے چیئرمین شیخ حافظ محمد اصغرقادری نے کہاہے کہ پچھلے تین ماہ سے ہزاروں کینیٹرز پھنسے ہوئے ہیں ان تین ماہ میں خام مال پیٹرو کیمیکلز ناکارہ ہو کر رہ گیا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ صنعتکاروں اور تاجروں کے کروڑوں ڈالرز برباد ہونے کی وجہ سے انڈسٹریز وکاروبارتباہ اور لاکھوں مزدور بے روز گار ہو چکے ہیں ،کنیٹنرزایک عرصہ کے بعد کچھ ریلیز ہونے شروع ہوئے ہیں تو ان میں پڑا ہوا خام مال پیٹروکیمیکلز ایکسپائر ہو چکا ہے ۔

پیٹروکیمیکلز کو محفوظ کرنے کے لئے بندرگاہ میں کوئی انتظام یا سہولت نہیں ہے کیونکہ پیٹروکیمیکلز کو خاص ٹمپریچر پر رکھنا ہوتا ہے اگر پیٹروکیمیکلز کو خاص درجہ حرات پر نہ رکھاجائے تو وہ خراب ہوجاتا ہے ایک مدت کے بعد کنٹینرز ریلیز ہونے کے بعد صنعتکاروں اور تاجروں کا کروڑوں روپے کا نقصان ہو چکا ہے ۔

اس حکومت ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لاتے ہوئے صنعتکاروں اور تاجروں کے نقصانات کے ازالہ کے لئے فوری اقدامات کرے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی عدم توجہی کی وجہ سے انڈسٹریز تیزی بند ہو رہی ہیں لہذا انڈسٹریز کے مسائل حل کرنے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے جائیں تاکہ انڈسٹریز کی بحالی کے ساتھ بے روزگار افراد کو روزگار میسر آسکے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت درآمد خام مال اور دیگر مصنوعات کی انڈسٹریز لگانے میں تعاون اور سہولیات فراہم کرے تو خطیر زرمبالہ سمیت پیٹرو کیمیکلز سمیت دیگر خام مال کو ایکسپائر ہونے سے بچایا جا سکتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں ٹیکنالوجی کے فروغ ‘ مقامی انڈسٹری کی صلاحیت کو بہتر بنانے اور درآمدات کے متبادل پالیسی پر توجہ مرکوز کرنے کے لئے تمام اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے 20 سالہ چارٹر آف اکنامی مرتب کریں جس پر آنے والی تمام حکومتیں بلاتعطل عملدرآمد جاری رکھیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: