آئین کے ساتھ کھلم کھلا بغاوت کی جارہی ہے، تحریک انصاف

کراچی : پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی سیکریٹری جنرل اسد عمر نے کہا ہے کہ آج پاکستان شدید آئینی بحران سے گزر رہا ہے، اسکی گاہے بگا ہے وراننگ دیتے رہے۔ کھلم کھلا آئین کیساتھ بغاوت کی جارہی ہے۔ نہ تو دونوں صوبوں کے گورنر آئینی ذمہ داری پوری کر رہے ہیں نہ الیکشن کمیشن۔ عدالتی حکم کے مطابق 90 دن کے اندر الیکشن کی تارخ دی جائے۔ آئینی ماہرین بھی کہہ رہے ہیں کہ آپ 90 دن سے زیادہ آگے نہیں جا سکتے۔

یہ بات انہوں نے پی ٹی آئی سندھ سیکریٹریٹ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ جنرل سیکریٹری سندھ مبین جتوئی، مرکزی نائب صدر بلال غفار، صدر کراچی آفتاب صدیقی، فہیم خان، شہزاد قریشی، سدرہ عمران، آغا ارسلان،۔ فضہ ذیشان اور دیگر رہنما موجود تھے۔

اسد عمر نے مزید کہا کہ تین باتیں ہیں کہ ایک تو گورنر الیکشن کی تاریخ دے سکتا ہے، الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے الیکشن کرانا۔ دوسرا صدر پاکستان کو بھی یہ حق حاصل ہےکہ وہ الیکشن کرانے کی تاریخ دے سکتے ہیں۔ صدر پاکستان نے آئینی کردار بہترین طریقے سے نبھایا ہے۔ ان سے درخواست ہے کہ وہ ایک بار پھر اپنا آئینی کردار ادا کریں۔ پاکستان بنتے وقت قائداعظم نے واضح کیا کہ یہ ملک جمہوریت کے تحت چلے گا۔ پاکستان کے عوام، آئین اور جمہوریت کامیاب ہونگے۔

انہوں نے کہاکہ جتنی مرضی کوشش کرلیں انہیں گھسیٹ کر الیکشن تک لیکر جائیں گے۔ اسد عمر کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان کو عدالتوں کا سامنا کرنے میں کبھی کوئی مسئلہ نہیں ہوا۔ عمران خان کو ڈاکٹرز کا مشورہ ہے کہ وہ عدالت نہ جائیں۔ ابھی وکلاء کے ساتھ مشاورت ہو رہی ہے دیکھیں کیا فیصلہ ہوتا ہے۔

اس موقع پر پی ٹی آئی سندھ کے صدر و سابق وفاقی وزیر علی زیدی کا کہنا تھا کہ چیئرمین صاحب نے اسد عمر اور ہم سے مشاورت کے بعد آفتاب صدیقی صاحب کو کراچی کا صدر نامزد کیا ہے۔ بلال غفار نے ایک سال رجیم چینج کے بعد بہترین طریقے سے تنظیم کو چلایا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: