ایف نائن پارک واقعہ ,ملزم کا 50سے ذیادہ ذیادتی کیس میں ملوث ہونے کا انکشاف

اسلام آباد : سماجی کارکن کا کہنا ہے کہ ایف نائن پارک زیادتی کیس میں ملوث ملزم 3 سال میں 50 کے قریب زیادتی کے کیسز میں ملوث پایا گیا جو پولیس مقابلے میں گذشتہ روز ہلاک ہو گیا تھا۔

انہوں نے متاثرہ لڑکی کی وکیل ایمان مزاری کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پولیس نے ملزم کو گرفتار کیا، متاثرہ لڑکی نے شناخت بھی کر لی تھی اور ملزمان نے تسلیم کیا کہ انہوں نے لڑکی کے ساتھ زیادتی کی۔

فرزانہ باری نے کہا ہمیں شک تھا پولیس پیسے لے کر ملزمان کو چھوڑ نہ دے۔

زیادتی کا شکار لڑکی نے ملزمان کی لاشوں کی بھی شناخت کی۔

معاملے کی جوڈیشل انکوائری کروائی جائے، ایف آئی آر لیک ہونے کی محکمانہ تحقیقات کروائی جائیں۔

ایمان مزاری کا کہنا ہے کہ مقابلے میں ہلاک ہونے والے ملزمان کو متاثرہ لڑکی نے تھانے میں شناخت کر لیا تھا۔

انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ متاثرہ لڑکی کو ملزمان کی شناخت کے لیے تھانے بلایا گیا جہاں پر متاثرہ لڑکی نے گرفتار ملزمان کی تصدیق کی۔

ملزم کی گرفتاری ہو گئی تھی مگر ٹویٹ کیا گیا کہ ملزمان کے قریب پہنچ گئے ہیں۔ملزمان کو ٹرائل سے قبل ہی جعلی پولیس مقابلے میں مار دیا گیا۔

وکیل ایمان مزاری نے مزید کہا کہ ایس ایس پی سے کیس کے سلسلے میں بات کرنے کی کوشش کرتی رہی مگر وہ دستیاب نہیں ہوئیں۔

ملزمان نے ٹرائل کے دوران انکشافات کرنے تھے کہ وہ اور کتنے جرائم میں ملوث رہے۔

خیال رہے کہ اسلام آباد کے ایف نائن پارک میں خاتون سے مبینہ زیادتی کے دونوں ملزمان ہلاک ہو گئے تھے۔

پولیس کے ذرائع نے دعویٰ کیا کہ اسلام آباد کے سیکٹر ڈی بارہ میں مبینہ پولیس مقابلے میں موٹرسائیکل سوار ملزمان نے ناکے پر فائرنگ کی لیکن جوابی کارروائی میں 2 ملزمان مارے گئے۔جس کے بعد نعشیں اسپتال منتقل کردی گئیں۔

یاد رہے کہ اسلام آباد کے ایف 9 پارک میں لڑکی کے ساتھ مبینہ طور پر اجتماعی زیادتی کا واقعہ پیش آیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: