عمران رویے پرمعذرت کریں ، پارلیمنٹ میں واپس آئیں:بلاول

برلن : وزیر خارجہ اور پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ آج بھی عمران خان سے کہتا ہوں کہ وہ اپنے رویے پر توبہ اور معذرت کریں، عمران خان مان لیں کہ وہ غیر جمہوری تھے، غیر جمہوری کام کر رہے تھے، پارلیمان پر لعنت بھیج رہے تھے،وہ پارلیمنٹ میں واپس آئیں، ہمارے ساتھ چارٹر آف ڈیموکرسی کریں۔

انہوں نے کہاکہ سیاسی محاذ آرائی اور عدم استحکام ملک کے مفاد میں نہیں، جب تک ہمسایہ ملک افغانستان میں دہشت گردوں کے خلاف کارروائی نہیں ہوگی پاکستان میں سکیورٹی رسک رہے گا، ہم کالعدم ٹی ٹی پی کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے،کوئی ملک ہمارا دوست نہیں رہ سکتا جو کالعدم ٹی ٹی پی کے ساتھ تعلقات رکھے گا۔ عبوری حکومت کارروائی کرے۔

جرمن نشریاتی ادارے ڈوئچے ویلے کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا افسوس کی بات ہے کہ کچھ پالیسیوں کی وجہ سے ہم ایک بار پھر دہشت گردی کی لہر کا سامنا کر رہے ہیں، لیکن ہم اس صورتحال پر قابو پالیں گے، ہمارے پڑوسی ملک میں موجود عبوری حکومت کو اس طرح کی تنظیموں کو اجازت نہیں دینی چاہیے کہ وہ اس کی سرزمین استعمال کرکے اس طرح کی سرگرمیاں انجام دیں، اسے چاہیے کہ وہ اپنی سرزمین پر ان کے خلاف کارروائی کرے،جو تنظیمیں ہمارے ملک، اس کے آئین کو نہ مانیں۔

انہوں کہاکہ جو دہشت گردی کو دہشت گردی نہ سمجھیں ، میں نہیں سمجھتا کہ اس طرح کے گروپس کے ساتھ مذاکرات ملک و قوم کے فائدے میں ہیں۔

بلاول بھٹو نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا تھوڑا سا مک مکا کرنے کی ضرورت ہے تاکہ اتفاق رائے پیدا کیا جاسکے، میں اس طرح کی بات چیت اور مذاکرات کرنے کے لیے تیار ہوں، اگر ہم اس طرح کا اتفاق رائے پیدا کرسکیں تو یہ ملک کے مفاد میں ہوگا ۔ u

اپنا تبصرہ بھیجیں: