منافع خوروں کیخلاف سخت کارروائی: وزیراعظم نے انتظامیہ کو فری ہینڈ دیدیا

اسلام آباد : و زیراعظم شہبازشریف نے ذخیرہ اندوزوں اور منافع خوروں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی ہدایت کرتے ہوئے وفاق اور صوبوں میں ضلعی انتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو فری ہینڈ دے دیا ۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا منافع خوری، ذخیرہ اندوزی اور زائد نرخ لینے والوں کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے ،رمضان المبارک سے قبل گوداموں، دکانوں اور منڈیوں میں آپریشن کلین اپ کریں،سیلاب، معاشی مشکلات میں پھنسی عوام سے رمضان میں جوزائد قیمت لے، اس سے آہنی ہاتھوں سے نمٹیں۔انہوں نے کہا عبادتوں کے مہینے میں جو روزے داروں کو تنگ کرے، اسے قانون کی طاقت سے سبق سکھائیں،اشیاء کی طلب، رسد اور قیمتوں میں گڑ بڑ ہوئی تو متعلقہ علاقوں کے افسران کے خلاف کارروائی ہوگی۔

وزیر اعظم نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ خوراک کی کمی نہیں تو پھر مرغی کی قیمت میں اضافہ کیوں؟ جو عوام کو تنگ کرے ، قانون اسے گرفت میں لے،کوئی نرمی نہ برتی جائے۔وزیر اعظم نے اعلیٰ حکام کو ہدایت کی کہ عوام پر مہنگائی کا بوجھ بڑھانے والے منافع خوروں کو پکڑیں اور قانون کا سبق پڑھائیں۔وزیراعظم نے ترکیہ اور شام کے زلزلہ متاثرین کیلئے پاکستان کی طرف سے جاری امدادی کارروائیوں پر جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ ترکیہ میں سردی سے بچاؤ کے خیموں کی بقایا کھیپ کی تیاری و ترسیل 23 مارچ تک مکمل کی جائے۔

وزیراعظم نے ہدایت کی کہ ترکیہ میں سردی سے بچاؤ کے خیمے فضائی راستے سے بھیجے جائیں،نئے خیموں کو معیار کو نظر انداز کئے بغیر کم سے کم نرخوں پر تیار کیا جائے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ ترکیہ میں بھیجے جانے والے خیموں کا معیار جانچنے کیلئے تھرڈ پارٹی ویری فیکشن یقینی بنائی جائے۔وزیرِ اعظم نے کسٹم حکام کو امدادی سامان کی فوری ترسیل کیلئے ہوائی اڈوں پر خصوصی انتظامات کی ہدایت دی ۔

وزیراعظم شہباز شریف نےقائد مسلم لیگ(ن) نواز شریف اورملک کے مستقبل اپنے نوجوانوں کو’’یوتھ پروگرام‘‘کے 10 سال مکمل ہونے پرمبارکباددیتے ہوئے کہا ہے کہ وفاقی حکومت نے سال 2023کونوجوانوں کا سال قراردیا ہے،ملک کو درپیش معاشی مشکلات کے باوجود بھی نوجوانوں کو نظراندازنہیں کرسکتے ، اسی لئے یوتھ پروگرام دوبارہ شروع کیا جارہا ہے۔

مزیدبرآں وزیر اعظم نے اٹلی میں کشتی حادثے میں دودرجن سے زائد پاکستانیوں کے ڈوبنے کو تشویشناک قرار دیتے ہوئے دفتر خارجہ کو ہدایت کی ہے کہ جلد حقائق سے قوم کو آگاہ کرے۔وزیر اعظم نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ قوم آج پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کا منہ توڑ جواب دینے پر پاک فضائیہ کو زبردست خراج تحسین پیش کرتی ہے،گوکہ ہمارا مقصد سب کے ساتھ امن سے رہنا ہے تاہم مادر وطن کے دفاع کے فرض سے بھی غافل نہیں رہ سکتے، اس حوالے سے کوئی بھی غلطی نہ کرے۔

وزیراعظم سے ارکان قومی اسمبلی محمد خان ڈاہا ، افتخار نذیر، سابق رکن قومی اسمبلی تہمینہ دولتانہ اور سابق ممبر صوبائی اسمبلی عرفان دولتانہ نے ملاقاتیں کیں۔وزیراعظم سے مشیرِ وزیراعظم برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان قمر الزماں کائرہ اور گلگت بلتستان کے گورنر سید مہدی شاہ نے بھی ملاقات کی۔وزیرِاعظم نے گلگت بلتستان کے حل طلب مسائل فوری طور پر حل کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: