دنیا کے سب سے طاقتور راکٹ ” اسٹار شپ ” کی آزمائشی پرواز کب ہوگی ؟

نیویارک : اسپیس ایکس دنیا کے سب سے طاقتور راکٹ سٹار شپ کی لانچ ریہرسل آئندہ ہفتے شروع کر رہا ہے اور اس کی پہلی آزمائشی پرواز ممکنہ طور پر اگلے ہفتے ہو گی۔
رپورٹ کے مطابق اسپیس ایکس نے ٹیکساس میں کمپنی کے دفتر میں اپنے لانچ پیڈ پر بڑے پیمانے پر سٹار شپ کی تصاویر جاری کیں جو چاند اور اس سے باہر خلابازوں کو بھیجنے کے لیے ڈیزائن کی گئی ہیں۔
اسپیس ایکس نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ’ٹیم اگلے ہفتے لانچ ریہرسل کے لیے کام کر رہی ہے جس کے بعد سٹارشپ کا پہلا مربوط فلائٹ ٹیسٹ ہو گا۔‘اسپیس ایکس کو ٹیسٹ لانچ کرنے پہلے فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن سے گرین سگنل کی ضرورت ہو گی۔
230 فٹ (69 میٹر) سپر ہیوی بوسٹر کو ٹیسٹ فائرنگ کے دوران زمین پر لنگر انداز کیا گیا تھا جسے سٹیٹک فائر کہا جاتا ہے۔
سٹار شپ ایک دوبارہ قابل استعمال کیپسول پر مشتمل ہے جو عملہ اور کارگو اور پہلے مرحلے کا بوسٹر لے کر جائے گا۔
ناسا نے اپنے خلابازوں کو چاند پر لے جانے کے لیے سٹار شپ کیپسول کو آرٹیمس مشن تھری کے لیے منتخب کیا ہے جو 2025 میں لانچ کیا جائے گا۔
امریکی خلائی ایجنسی نومبر 2024 میں بھاری راکٹ جسے سپیس لانچ سسٹم کہا جاتا ہے۔ کا استعمال کرتے ہوئے خلابازوں کو چاند کے مدار تک لے جائے گی ۔
اسٹار شپ سپیس لانچ سسٹم سے بڑا اور زیادہ طاقتور ہے۔یہ 17 ملین پاؤنڈ زور پیدا کرتا ہے جو اپالو کے خلابازوں کو چاند پر بھیجنے کے لیے استعمال کیے جانے والے سیٹرن وی راکٹوں سے دگنا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: