متحدہ کا کارکن ماورائے عدالت قتل، اہل خانہ کا پاکستان قیادت سے شکوہ

کراچی: ایم کیو ایم لندن سے وابستہ امین نامی نوجوان کو گزشتہ روز تشویشناک حالت میں اسپتال لایا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا، میڈیکل رپورٹ کے مطابق مقتول پر دوران حراست شدید تشدد کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق 6 ماہ قبل شاہ فیصل سے جاتے ہوئے کورنگی فلائی اوور سے گرفتار ہونے والے امین کا تعلق متحدہ قومی موومنٹ لانڈھی کے یونٹ 88 سے تھا۔ 6 ماہ قبل گرفتار ہونے والا امین گزشتہ روز تک لاپتہ تھا۔

اہل خانہ کے مطابق امین کے بڑے بھائی شمیم اے آر وائی حملہ کیس میں گرفتار اور سینٹرل جیل میں قید ہیں، لانڈھی سے تعلق رکھنے والے متحدہ کے اہم ذمہ داران کی پی ایس پی (پاک سرزمین پارٹی) میں شمولیت کے بعد دونوں بھائیوں کو  نئی جماعت میں شمولیت نہ کرنے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دی گئیں تھی۔اہل خانہ کی جانب سے ذرائع نیوز کو موصول ہونے والی مقتول کی تصاویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ تشدد کے نشانات واضح ہیں۔

ایم کیو ایم پاکستان نے گزشتہ روز ماورائے عدالت قتل پر کوئی بیان جاری نہیں کیا تاہم گزشتہ روز فاروق ستار کی جماعت نے شہر میں میوزیکل شو کے انعقاد کا اعلامیہ جاری کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں:

اپنا تبصرہ بھیجیں