کراچی میں‌ معروف بے گناہ عالم دین کی بہیمانہ ٹارگٹ کلنگ

شہر قائد کے علاقے گلستان جوہر میں جامعہ ابوبکر اسلامیہ کے مہتمم کو ٹارگٹ کرکے قتل کردیا گیا۔

پولیس حکام کے مطابق مولانا ضیاء الرحمان پارک میں چہل قدمی کررہے تھے کہ انہیں موٹرسائیکل سوار ملزمان نے فائرنگ کا نشانہ بنا کر قتل کیا۔

اے ایس پی ظفر چھانگا کے مطابق ضیاء الرحمن گلستان جوہر میں ایف بی آر بلڈنگ کے سامنے پارک میں چہل قدمی کررہے تھے کہ نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے ٹارگٹ کرکے قتل کیا ۔

اے ایس پی کے مطابق مولانا ضیاء الرحمن کو تین سے چار گولیاں ماری گئی ہیں جس سے وہ موقع پر جاں بحق ہوگئے البتہ مولانا ضیاء الرحمن سے موبائل فون یا نقدی وغیرہ نہیں چھینی گئی ہے ۔ پولیس کو جائے وقوعہ سے پستول کے دو خول ملے ہیں جبکہ اطراف کی سی سی ٹی وی فوٹیجز کا بھی جائزہ لیا جارہا ہے۔

گلستان جوہر بلاک 16 میں جامعہ ابوبکر اسلامیہ کے مہتمم کے قتل کے واقعہ پر آئی جی سندھ رفعت مختار نے ایس ایس پی ایسٹ سے تفصیلات طلب کرلیں۔

 دوسری جانب جائے وقوعہ پر گفتگو کرتے ہوئے ایس ایس پی ایسٹ عرفان بہادر کا کہنا تھا کہ جائے وقوعہ سے 11 خول ملے ہیں ، چار خول نائن ایم ایم پستول اور سات خول تیس بور پستول کے ہیں۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ دو موٹر سائیکل پر سوار ملزمان نے اندھا دھند فائرنگ کی، اطراف میں موجود سی سی ٹی وی کیمروں کی نشاندہی کرلی گئی ہے امید ہے کیمروں سے ٹارگٹ کلرز کی شناخت ممکن ہوجائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: