ایم کیوایم ،جی ڈی اے اورجے یوآئی کا مقبول باقرپرعدم اعتماد

کراچی : گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس،ایم کیوایم پاکستان اورجمیعت علماء اسلام ( ف) نے مشترکہ پلیٹ فارم پریکجا ہوکرسیاسی جدوجہد کرنیکا اعلان کرتے ہوئے سندھ کے نگراں وزیراعلیٰ جسٹس ریٹائرڈ مقبول باقرپرعدم اعتماد کا اظہار کردیا اورکہا ہے کہ نگراں وزیراعلیٰ ہاؤس پیپلزسیکریٹریٹ بنا ہوا ہے،شفاف الیکشن کیلئے سندھ میں سسٹم توڑنے،الیکشن کمشنرکو ہٹانےاور افسران کے بین الصوبائی تبادلےکا مطالبہ کیا ہے،تین جماعتی اتحاد نے وسیع تراتحاد کے لئے نوازلیگ اور قوم پرست جماعتوں سے بھی رابطے کا فیصلہ کرلیا اورکہا کہ ہم سندھ میں پیپلزپارٹی کا متبادل ہیں شفاف الیکشن کو یقینی بنانے کیلئے سندھ بھرمیں بلدیاتی کونسلز معطل کی جائیں،تینوں جماعتوں نے اکتوبرمیں امن مارچ کی حمایت کا بھی اعلان کیا۔

ان خیالات کا اظہارمنگل کو فنکشنل ہاؤس کلفٹن میں ڈاکٹرصفدرعباسی،سردارعبدالرحیم،ایم کیوایم کے ڈاکٹرفاروق ستار،علامہ راشد محمود سومرو نے پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا،جی ڈی اے کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹرصفدرعباسی نے کہا کہ 15سال میں لوٹ مارمیں حصہ لینے والے ابھی بھی وہیں بیٹھے ہیں اورپیپلزپارٹی کے ایجنڈے پرکام کررہے ہیں اگرصورتحال تبدیل نہ ہوئی تو ان افسران کے نام لینے پرمجبور ہوں گے،انہوں نے کہا کہ ضرورت اس بات کی تھی کہ سینئربیوروکریسی کے تبادلے و تقرریاں شفاف الیکشن کو مدنظررکھتے ہوئے غیرجانبدارافسران کی تعیناتی کرنا ہوگی،وزیراعلیٰ ہاؤس میں بھی مراد علی شاہ کے دست راست افسران موجود ہیں اگر شفاف الیکشن کروانے ہیں تو سابقہ حکومت سے منسلک افسران کو فورا بین الصوبائی تبادلہ کرکے صاف شفاف اورغیرجانبدار افسران کو تعینات کیا جائے۔

ایم کیوایم کے رہنما ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ شفاف الیکشن کرانے ہیں تو لیول پلیئنگ فیلڈ قائم کرنا ہوگی،وزیراعلی بدل گیا مگرکرپشن کی علامت موجود ہے،ہم الیکشن کمیشن کے سامنے صورتحال رکھیں گے اگر یہ صورتحال رہی تو قبضہ مافیا کرپٹ مافیا قابض رہیگا۔

علامہ راشد محمود سومرونے کہا کہ جمعیت کی کوشش تھی کہ سندھ میں گرینڈ الائنس بنایا جائے،ایم کیوایم پاکستان کی قیادت کا شکر گزار ہوں انہوں نے ہمارا خیرمقدم کیا۔

انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم کے ساتھ ساتھ ہماری قوم پرست رہنماؤں سے بھی بات ہوئی ہے،آج اصولی اتفاق ہوا ہے کہ سندھ کے عوام کو پیغام دے رہے ہیں کہ سندھ میں متبادل پلیٹ فارم موجود ہے،اس پلیٹ فارم سے سابق قابض جماعت کا دھڑن تختہ کرینگے،سندھ کے الیکشن کمشنرکو فوری ہٹانا چاہیئے،غیرمتنازع اورغیرجانبدار الیکشن کمشنر تعینات کیا جائے اگراس بارمینڈیٹ چوری کیا گیا تو ہم تمام جماعتیں میدان میں اس وقت تک ہونگی جب تک انصاف نہیں دیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: