ووٹ کا اندارج: الیکشن کمیشن نے 25اکتوبر تک کی مہلت دیدی

کراچی: الیکشن کمیشن نے کہاہے کہ 28 ستمبر سے 25 اکتوبر 2023 تک انتخابی فہرستوں کو غیر منجمد کردیا گیا ہے ۔

الیکشن کمیشن کے مطابق25 اکتوبرتک تمام اہل افراد جن کے پاس شناختی کارڈ موجود ہو وہ اپنے ووٹ کا اندراج کر سکتا ہے ،نیز اگر کوائف یا ایڈریس میں کوئی غلطی ہو وہ بھی درست کی جا سکتی ہے۔واضح رہے کہ انتخابی فہرستوں کو ملک بھر میں 20 جولائی 2023 کو منجمد Freeze کر دہا گیا تھا قانون کے مطابق ووٹ کا اندراج ووٹر کا اکے شناختی کارڈ کے مطابق مستقل یا موجودہ پتہ پر کیا جاتا ہے ۔ تیسرے ایڈریس پر کسی ووٹ کا اندراج نہیں ہو سکتا ۔تاہم سرکاری ملازمین اگر کسی دوسرے ضلع یا صوبے میں تعینات ہیں تو اپنی پوسٹگ والی جگہ پر اپنا اور فیملی کا ووٹ درج کرا سکتا ہے۔

الیکشن کمیشن روزانہ کی بنیاد پر میڈیا کےذریعے سے عوام کو ووٹ کے اندراج، اخراج ودرستگی کے بارے میں مسلسل آگاہی فراہم کر رہا ہے جوکہ 25 اکتوبر 2023 تک جاری رہے گا۔

مزید الیکشن کمیشن نے تمام 8 لاکھ سے زائد افراد جن کو نادرا کی طرف سے شناختی کارڈ جاری کئے گئے ہیں انکا ڈیٹا یکم اکتوبر 2023 کو نادرا سے حاصل کر لیا تھا جس کی ڈیٹا انٹری جاری ہے اور یہ تمام اہل افراد آئندہ عام انتخابات میں اپنا حق رائے دہی استعمال کر یں گے ۔اس کے علاوہ بھی 25 اکتوبر 2023 کیونکہ الیکشن کمیشن نے ووٹ کے اندراج، اخراج ودرستگی کی cut of date مقرر کی ہے ۔ لہذا یسے تمام افراد جن کو 25 اکتوبر 2023 تک شناختی کارڈ جاری ہونگے انکے ووٹوں کے اندراج کو یقینی بنایا جائے گا۔ پاکستان کے تمام اضلاع میں ڈسٹرکٹ کمشنر بطور رجسٹریشن آفیسر تعینات ہیں اور ووٹ اندراج میں تمام افراد کو مکمل سہولت Facilitation دی جارہی ھے ۔نیز ووٹ کا اندراج اور منتقلی فارم 21 پر ہوتی ھے جو الیکشن کمیشن کی ویب سائٹ www.ecp.gov.pk پر موجود ھے اور ڈاؤن لوڈ کیا جا سکتا ہے۔ا

لیکشن کمیشن نے تمام اہل پاکستانیوں بشمول خواتین، نوجوان، افراد باہمی معذوری، اقلیتی برادری سے اپیل کی ھے کہ اپنے اور اپنے اہل خانہ کے ووٹ کے اندراج کو یقینی بنائیں کیونکہ اب صرف 10 دن رہ گئے ہیں اور 25 اکتوبر 2023 کو ملک بھر میں تمام انتخابی فہرستوں کو منجمد Freeze کر دیا جائے گا جس کے بعد کسی بھی ووٹ کا نہ ہی اندراج ہو سکے گا اور نہ ووٹ کی منتقلی ہو سکے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: