ایم کیو ایم کی مریم نواز کو کراچی سے الیکشن لڑوانے کی پیش کش، ملاقات کی اندرونی کہانی

پاکستان مسلم لیگ (ن) اور متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کی قیادت کے درمیان اعلیٰ سطح پر بات چیت ہوئی۔

ملاقات کے بعد دونوں جماعتوں کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ ایم کیو ایم اور ن لیگ نے آئندہ عام انتخابات مل کر لڑنے اور سیٹ ایڈجسٹمنٹ کا فیصلہ کیا ہے۔ متحدہ اور ن لیگ کی اس ملاقات کو سیاسی حلقے انتہائی اہم اور آئندہ عام انتخابات کی ایک اہم صورت قرار دے رہے ہیں۔

اجلاس کی اندرونی کہانی

ذرائع کو ملنے والی مصدقہ اطلاع کے مطابق دونوں جماعتوں کے وفود کی ملاقات انتہائی خوشگوار ماحول میں ہوئی اور اس دوران گرمجوشی بھی دیکھنے کو ملی، دونوں جماعتوں نے باہمی اختلافات بھلا کر نئے سرے سے سیاسی رشتہ قائم کرنے کا بھی فیصلہ کیا۔

دونوں جماعتوں نے ملک میں جاری سیاسی کشیدگی کے خاتمے اور دیگر جماعتوں کے ساتھ رواداری کو فروغ دینے پر اتفاق رائے کیا جبکہ سندھ کی سطح پر بڑا انتخابی اتحاد بنانے کو وقت کی اہم ترین ضرورت قرار دیا۔

ایم کیو ایم کے وفد نے لیگی قائد اور قیادت کو تجویز دی کہ سندھ کی قوم پرست اور دیگر سیاسی قوتوں کو ایک پلیٹ فارم پر ہونا چاہیے جبکہ متحدہ قومی موومنٹ نے مسلم لیگ ن کو سندھ میں انتخابی اتحاد بنانے کی باقاعدہ دعوت دے دی۔

ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم پاکستان سندھ کی دیگر جماعتوں سے ابتدائی روابط کر کے مسلم لیگ ن کو آگاہ کرے گی، پھر مسلم لیگ ن کی قیادت ان جماعتوں کی قیادت سے روابط کر کے معاملات آگے بڑھائے گی۔ اس کے بعد نوازشریف دیگر اتحادی جماعتوں کے ساتھ اتحاد اور تمام تر معاملات قائم کرنے کی منظوری دیں گے۔

نواز شریف نے سندھ کے نئے لیگی صدر بشیر میمن کو ایم کیو ایم کی قیادت سے مکمل رابطے میں رہنے کی ہدایت کی جبکہ ایم کیو ایم نے نواز شریف کو دورہ سندھ کے دوران اپنے مرکز پر آنے کی دعوت دی جسے لیگی قائد نے قبول کرلیا۔

اس کے علاوہ ذرائع نے بتایا کہ ایم کیو ایم پاکستان نے مریم نواز کو کراچی سے الیکشن لڑنے کی تجویز دی اور پیش کش کی کہ ایم کیو ایم پاکستان مریم نواز کا الیکشن خود لڑے گی اور تمام تر مہم بھی چلائے گی، لیگی قیادت کا مریم نواز کا کراچی سے الیکشن لڑنے کی دعوت پر پارٹی میں مشاورت کے بعد جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: