ہمدرد یونیورسٹی کے طالب علم کی پراسرار موت کی وجہ سامنے آگئی

کراچی :ہمدرد یونیورسٹی کے طالب علم کی پراسرار موت کی وجہ سامنے آگئی۔

عباسی شہید اسپتال کے میڈیکو لیگل آفیسر (ایم ایل او) نے کہا ہے کہ ہمدرد یونیورسٹی کے طالبعلم امان کمار ولد دلیپ کمار کی موت طبعی وجوہات کے سبب ہوئی ہے تاہم پولیس مزیدتحقیقات کررہی ہے۔

واضح رہے کہ متوفی کی لاش منگل کی شام کو ہمدرد یونیورسٹی کے بوائز ہاسٹل میں اس کے کمرے سے ملی تھی۔

ہمدرد یونیورسٹی کے وائس چانسلر، رجسٹرار اور ڈین فیکلٹی آف انجینئرنگ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے 20 سالہ طالب علم کی ناگہانی موت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیا اوراپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا ہے۔

بوائز ہاسٹل کے بلاک 2 میں کمپیوٹر سائنس ڈپارٹمنٹ کے سیکنڈ ایئر کی طالبعلم کی لاش ملنے کے فوری بعد اس کی اطلاع اس کے اہل خانہ کو دی گئی۔

کراچی میں موجود آہنجانی طالب علم کے چچا راج کمار نے ضروری قانونی کاروائی کے بعد لاش کو وصول کیا اور میّت کو طالب علم کے آبائی شہر شہداد کوٹ لے گئے۔

پولیس لاش کی برآمدگی سے لے کر لواحقین کے حوالے کرنے تک موجود رہی ۔پولیس کی تفتیش کررہی ہے تاہم ابھی تک شبہ کی کوئی وجہ سامنے نہیں آئی ہے۔

طالب علم کے اہل خانہ نے ایف آئی آر درج کرانے اور پوسٹ مارٹم کرانے سے بھی انکار کردیا۔ تاہم تفتیش اور ضروری قانونی تقاضوں کو پورا کرنے کیلئے پوسٹ مارٹم پھر بھی کیا گیا ۔ پوسٹ مارٹم کے بعد ایم ایل او کی جانب سے موت کی وجہ قدرتی وجوہات قرار دی گئی۔

دریں اثنا، یونیورسٹی نے کیس کی مزید تحقیقات کے لیے رجسٹرار کی سربراہی میں تین رکنی کمیٹی تشکیلٹ دے دی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: