پولیو: شکیل آفریدی نے لوگوں کے ذہنوں میں شکوک و شبہات پیدا کیے، بابر بن عطا

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاونِ خصوصی برائے انسداد پولیو مہم بابر بن عطا نے تصدیق کی ہے کہ پاکستان میں 32 پولیو کے کیسز ہیں، شکیل آفریدی کی وجہ سےلوگوں کے ذہنوں میں ابہام پیدا ہوا۔

اُن کا کہنا تھا کہ دنیا میں اس وقت اینٹی ویکس مہم چل رہی ہے، نیویارک میں اس وقت ایک ہزار30خسرہ کیسز سامنےآئےہیں، نیویارک میں خسرہ کیسز کی وجہ جعلی پروپیگنڈا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں اس وقت 32پولیو کے کیسز ہیں، پولیو کے90فیصد کیسز میں کلیم کیاگیا کہ ویکسین پلائی گئی ہے مگر بدقسمتی سے خون چیک کی رپورٹ سے معلوم ہوا کہ ویکسین نہیں پلائی گئی۔

اُن کا کہنا تھا کہ 1994 میں انسدادپولیومہم شروع ہوئی تو22ہزاربچے پیرالائز تھے، آج پاکستان میں یہ تعداد22ہزار سے کم ہوکر صرف32پرآگئی ہے، انسدادپولیو پروگرام کیلئےلوگوں کو مزیدآگاہی دینے کی ضرورت ہے۔

بابر بن عطا کا کہنا تھا کہ جعلی پروپیگنڈےپرحکومت  نےفیس بک انتظامیہ کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردیا، انسدادپولیوپرجعلی پروپیگنڈاکرنیوالوں کوٹیکنیکل بنیادپرثابت کرتےہیں، انسدادپولیوپروگرام پرپروپیگنڈاکرنیوالے500سے700پیجز بلاک کئے، والدین کی آگاہی کیلئےپولیو کے خاتمے کیلئے مہم چلانی پڑے گی، قومی انسدادپولیو مہم نومبر سے زیادہ چلائی جائیں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: