مردم شماری:‌کراچی کی آبادی ڈھائی کروڑ سے بھی کم

کراچی ۔ 19سال بعد ہونے والی مردم شماری کے تمام مراحل مکمل ہوگئے۔ غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج موصول ہوگئے ہیں جس کے مطابق کراچی وسطی آبادی کے لحاظ سے سندھ کا سب سے بڑا ضلع بن گیا۔

ضلع وسطی کی آبادی 48لاکھ سے تجاوز کرگئی۔ بلحاظ آبادی عمرکوٹ سندھ کا سب سے چھوٹا ضلع قرار دیا گیا ہے۔ غیرحتمی اور غیرسرکاری نتائج کے مطابق عمرکوٹ کی آبادی 9لاکھ 52ہزار سے زائد ہے۔

نئی مردم شماری کے بعد سندھ کی مجموعی آبادی 6 کروڑ 19 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے۔ 1998ء کے مقابلے میں سندھ کی آبادی میں ڈھائی کروڑ سے زائد کا اضافہ ہوا ہے۔ کراچی کے چھ اضلاع کی آبادی 2 کروڑ 31 لاکھ 35ہزار سے زائد ہوگئی۔

حیدرآباد ڈویژن کے 9اضلاع میں ایک ایک کروڑ 49لاکھ ہم وطن بستے ہیں۔ 1 کروڑ 31 لاکھ سندھ کے باسیوں کو نلکے کے بغیر پانی ملتا ہے۔ 98لاکھ سے زائد سندھ والوں کے پاس بجلی دستیاب نہیں۔ 41 سینسز اضلاع کے ساڑھے 7ل اکھ گھروں میں غسل خانہ نہیں جبکہ جمعرات کوجاری کردہ اقتصادی سروے رپورٹ2016.17 کے مطابق پاکستان کی مجموعی آبادی کا تخمینہ 19 کروڑ 91 لاکھ لگایا گیا ہے۔

سروے کے مطابق 2016ء میں مجموعی آبادی 19 کروڑ 54 لاکھ اور 2015ء میں 19 کروڑ 17 لاکھ تھی۔ 2017ء کے دوران ملک کی شہری آبادی کا تخمینہ 8 کروڑ 7 لاکھ اور دیہی آبادی کا تخمینہ 11 کروڑ 83 لاکھ لگایا گیا ہے۔تاہم مردم شماری کے اعداد و شمار باقاعدہ جاری بھی کئے جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: