کراچی:‌ پانچ ماہ میں 157 افراد قتل ، امن کے دعوؤں کی قلعی کھل گئی

کراچی : شہر قائد میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے امن و امان کے دعوؤں کی قلعی کھل گئی، 5 ماہ میں فائرنگ اور پرتشدد واقعات میں 157 افراد قتل کردیئے گئے جبکہ شہریوں کو 12 ہزار 173 موبائل فون ،602 گاڑیوں اور نو ہزار سے زائد موٹر سائیکلوں سے محروم کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سی پی ایل سی نے شہر قائد میں رواں سال کے 5 ماہ کے دوران ہونے والے جرائم کی رپورٹ جاری کردی، رپورٹ کے مطابق جنوری سے مئی کے درمیان فائرنگ اور پر تشدد واقعات میں 157 افراد کو قتل کردیا گیا۔

اسٹریٹ کرمنلز نے شہریوں کو 12 ہزار 173 موبائل فونز سے محروم کردیا، شہر کے مختلف علاقوں سے 602 کاریں چھینی اور چوری کی گئیں جبکہ 5 ماہ کے دوران ڈاکوؤں نے شہریوں کو 9 ہزار آٹھ سو موٹر سائیکلوں سے بھی محروم کردیا۔

رپورٹ کے مطابق کاریں چھیننے کی سب سے زیادہ وارداتیں گلشن اقبال ،گلستان جوہر ،کلفٹن ،حیدری ،اور ناظم آباد کے علاقوں میں ہوئیں ،جبکہ موبائل فون چھیننے کے واقعات میں حیدری ،نارتھ ناظم آباد ،گلشن اقبال ،ڈیفنس، کلفٹن ،طارق روڈ ،بہادر آباد ،فیڈرل بی ایریا ، صدر اور اولڈ سٹی ایریا کے علاقے سر فہرست رہے۔

سی پی ایل سی کے مطابق 5 ماہ کے دوران شہر میں چار بینک ڈکیتیوں میں 1 کروڑ 15 لاکھ سے زائد رقم لوٹ کی گئی جبکہ شہر میں بھتہ خوری کے 21 جبکہ اغوا برائے تاوان کے دو کیس رپورٹ ہوئے۔

بشکریہ اے آر وائی

اپنا تبصرہ بھیجیں: