سبزیوں کی بڑھتی قیمتوں کے خلاف آواز صارف پھر میدان میں

کراچی: ملک بھر میں سبزیوں کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کے بعد ٹماٹر اور پیاز کی قیمتیں آسماں سے باتیں کرنے لگی ہیں، عوامی آواز بلند کرنے والی سماجی تنظیم آوازِ صارف ایک بار پھر ریلیف دلوانے کے لیے میدان میں آگئیں۔

تفصیلات کے مطابق عید قرباں کے بعد سے سبزیوں کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہوا جس کے بعد ٹماٹر 180 سے 200 اور پیاز کی قیمت بھی آسمان سے باتیں کرنے لگیں، قیمتوں میں اضافے کے باعث غریب صارف اسے خریدنے سے قاصر ہیں۔

پاکستان کے چاروں صوبوں میں قائم صوبائی اور بلدیاتی پرائس کنٹرول کمیٹیوں کو بھی سبزیوں کی بڑھتی قیمتوں سے کوئی غرض نہیں اور نہ ہی مناسب قیمتوں کے لیے تاحال کوئی اقدامات کیے گئے۔

فلاحی تنظیم آواز صارف نے عوام کی مشکل کو محسوس کرتے ہوئے ایک بار پھر میدان میں آنے کا فیصلہ کیا، چیئرپرسن اور بانی حسن آراء نے ٹماٹر ، پیاز کے بائیکاٹ کا اعلان کیا اور عوام سے اس کو کامیاب بنانے میں مدد بھی مانگی۔

حسن آراء نے صارفین کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ وہ کھانوں میں ٹماٹر کے بجائے دہی اور استعمال کریں اور پیاز کے استعمال کو بھی کچھ روز کے لیے ترک کردیں تاکہ سبزی دوبارہ اپنی اصل قیمت پر آجائے۔

آوازِ صارف کی بانی کا کہنا ہے کہ بائیکاٹ کرنے سے ذخیرہ اندوزوں کے پاس جمع ہونے والا مال جیسے ہی خراب ہونے لگے گا تو وہ غیر قانونی اور غیر ضروری منافع ختم کر کے اشیاء فروخت کرنے پر مجبور ہوں گے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل رمضان المبارک میں بھی آواز صارف کی جانب سے پھلوں کے تین روزہ بائیکاٹ کی مہم کا اعلان کیا گیا تھا جس میں پورے ملک سے عوام نے حصہ لیا اور تین دن بعد پھلوں کی قیمتوں میں واضح کمی دیکھنے میں آئی تھی۔

آواز صارف کی جانب سے اعلان کردہ مہم کا آغاز 25 ستمبر بروز پیر سے ہوچکا ہے اور یہ 30 ستمبر بروز ہفتے تک رہے گا، سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر صارفین اس میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: