تحریک انصاف کو بڑا دھچکا، شاہ محمود قریشی نے فیصلہ کرلیا؟

لاہور: تحریک انصاف کے وائس چیئرمین اور سینئر رہنماء شاہ محمود قریشی نے پی ٹی آئی کو خیرباد کہنے کا فیصلہ کرلیا۔

ذرائع کے مطابق رکن قومی اسمبلی اور تحریک انصاف کے اہم رہنماء شاہ محمود قریشی پارٹی چیئرمین کی پالیسیوں پر شدید مایوس ہیں اس لیے انہوں نے پارٹی سرگرمیوں سے علیحدگی اختیار کرلی۔

شاہ محمود قریشی سینیٹ انتخابات کے بعد سے پارٹی قیادت سے شدید نالاں ہیں کیونکہ اُن کا مؤقف تھا کہ پیپلزپارٹی کے ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کو ووٹ نہ دیا جائے۔

پارٹی قیادت پیپلزپارٹی سے پہلے ہی بیک ڈور معاہدہ کرچکی تھی اس لیے انہوں نے سینئر رہنماء کی باتوں کو نظر انداز کرتے ہوئے انہیں جھاڑ بھی پلائی، شاہ محمود نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ صادق سنجرانی اور بلوچستان کے آزاد سینیٹرز جلد پیپلزپارٹی میں شمولیت اختیار کرلیں گے اور اس سے تحریک انصاف کو شدید حد تک نقصان پہنچے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ شاہ محمود نے تحریک انصاف کی وکالت کرنا ختم کردی ہے اور اب وہ ایک بار پھر اپنی پرانی جماعت یعنی پیپلزپارٹی میں دوبارہ شمولیت اختیار کرنے پر سوچ و بچار کررہے ہیں۔

قریبی ذرائع یہ بھی کہتے ہیں کہ پی پی چھوڑ کر تحریک انصاف میں شامل ہونے کا مقصد یہ تھا کہ عوام کو تبدیلی مل سکے مگر ایسا نہ ہوسکا تو اب مزید وقت ضائع کرنے سے بہتر بھٹو فلسفے پر زندگی گزاری جائے۔

پنجاب سے تعلق رکھنے والے تحریک انصاف کے اہم رہنماء کا یہ بھی کہنا ہے کہ گذشتہ دو سال کے دوران پیپلزپارٹی سے پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے اراکین دوبارہ پی پی میں چلے جائیں گے اور اُن کے ساتھ پی ٹی آئی کے اہم رہنماء بھی زرداری پر اعتماد کا اظہار کریں گے۔

پیپلزپارٹی نے آئندہ عام انتخابات میں پنجاب سے جیت کے لیے بھرپور تیاریاں کرلیں ہیں اور اس ضمن میں آئندہ آنے والے چند برسوں میں مسلم لیگ ن، تحریک انصاف سمیت دیگر سیاسی جماعتوں کے اراکین جیالے بن جائیں گے۔


خبر کو عام عوام تک پہنچانے میں ہمارا ساتھ دیں، صارفین کے کمنٹس سے ادارے کا کوئی تعلق نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: