پی ایس ایل فائنل میں مقامیوں کی تضحیک، سرفراز احمد کو بھی نہ بخشا

کراچی: نیشنل اسٹیڈیم میں ہونے والے پاکستان سپرلیگ کے فائنل میچ میں پاکستان کرکٹ بورڈ نے سابق کرکٹرز ، سیاستدانوں اور اعلیٰ فوجی افسران کو شرکت کی دعوت دی مگر پی سی بی نے قومی کرکٹ ٹیم کے تینوں فارمیٹ کے کپتان کو میچ دیکھنے کے لیے مدعو نہیں کیا۔

کراچی میں پی ایس ایل کی اختتامی تقریب کا آغاز ہوا تو رنگا رنگ موسیقی سے بھر شام سجائی گئی اسی دوران شہزاد رائے اسٹیج پر آئے اور انہوں نے ساری قومیتوں کا نام لیتے ہوئے کہا کہ “کراچی میں مہاجر کثیر تعداد میں آباد ہیں، آپ کے جذبے کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں”۔

گلوکار نے سب کا نام لیا اور مہاجر یعنی اردو اسپیکنگ کا ذکر نہ کیا تو سوشل میڈیا اور دیگر حلقوں میں بحث چھڑ گئی، کسی نے اسے تعصب قرار دیا تو کسی نے ٹویٹر پر شہزاد رائے سے معافی مانگنے کا مطالبہ بھی کیا۔

اسلام آباد یونائیٹڈ اور پشاور زلمی کے مابین فائنل کا ٹاکرا سجا اور اُس سے قبل رنگا رنگ بھرپور اختتامی تقریب منعقد کی گئی تو اُس میں اعلیٰ شخصیات وزیراعظم، گورنر سندھ، گورنر خیبرپختونخواہ، وزیراعلیٰ سندھ، بلاول بھٹو زرداری، ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور، کور کمانڈر کراچی، ڈی جی رینجرز سندھ میجر جنرل سعید اور آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ سمیت دیگر معزز شخصیات نے شرکت کی۔

مزید پڑھیں: پی ایس ایل فائنل، اسٹیڈیم پرچھت کیوں‌ نہیں‌ لگائی گئیں؟

نیشنل اسٹیڈیم میں کیمرہ گھومنا شروع ہوا تو شاہد آفریدی، سابق کرکٹر ظہیر عباس سمیت دیگر نامور کھلاڑی بھی موجود تھے مگر قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کہیں نظر نہ آئے باوجود اس کے کہ وہ اسی شہر کراچی کے باسی ہیں۔

نامور صحافی (اسپورٹس) فیضان لاکھانی نے اس بات کا انکشاف کیا کہ انہوں نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے قائد اور قومی کرکٹ ٹیم کو دل دل سے نکالنے والے اہم کھلاڑی و قوم کے ہیرو سرفراز احمد کو فائنل کے لیے مدعو ہی نہیں کیا۔

یاد رہے کہ سرفراز احمد پی ایس ایل 3 کے آفیشل گانے میں بھی شامل نہیں تھے۔ اس ضمن میں پاکستان کرکٹ بورڈ نے کوئی باضابطہ جواب نہیں دیا تاہم بورڈ میں موجود ذرائع کا کہنا تھا کہ چونکہ سرفراز کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کپتان کی حیثیت سے ٹورنامنٹ کھیل رہے تھے اس لیے انہیں کسی باضابطہ دعوت نامے کی ضرورت نہیں تھی۔

تاہم کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے ٹورنامنٹ سے باہر ہونے کے بعد بھی سرفراز کو دعوت نہ دینا حیران کن ہے۔

ہمارا فیس بک پیج لائک کریں: https://www.facebook.com/ZarayeNews/

ٹوئٹر فالو کریں: https://twitter.com/ZarayeNews


خبر کو عام عوام تک پہنچانے میں ہمارا ساتھ دیں، صارفین کے کمنٹس سے ادارے کا کوئی تعلق نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: