آزادی مارچ میں‌ کوئی کردار نہیں، پچھلے دھرنوں‌ میں‌ حکومت کا ساتھ دیا، آصف غفور

راولپنڈی: پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ آزادی مارچ سے کوئی لینا دین نہیں، گزشتہ دھرنے میں بھی حکومت کا ساتھ دیا تھا۔

نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے آصف غفور نے فوج کی سیاسی مداخلت کے حوالے سے ہونے والی باتوں کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان سینئر اور پاکستان سے محبت کرنے والے سیاستدان ہیں، انہیں اس بات کا بخوبی انداز ہے کہ عالمی سطح پر دھرنے کے کیا اثرات مرتب ہوں گے اور اس سے پاکستان کا تشخص دنیا بھر میں کیا جائے گا۔

اُن کا کہنا تھا کہ حکومت اور فوج اپنے طور پر کشمیر کے مسئلے پر کام کر رہی ہیں ‘مسئلہ کشمیر کا کرتار پور راہداری سے کوئی تعلق نہیں‘اس کوسیاسی مسئلہ نہ بنایاجائے ۔ پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان کا مارچ سیاسی سرگرمی ہے اور اس سے پاک فوج کا کوئی لینا دینا نہیں‘الیکشن میں فوج کا کوئی کردار نہیں‘حکومت کے احکامات پرعملدرآمد کی پابندی کے لیے اسے الیکشن میں صرف سکیورٹی کے لیے بلایا جاتا ہے ۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ حکومت اگر الیکشن میں نہیں بلائے گی تو فوج نہیں جائے گی‘سابق دور کے دھرنے میں بھی فوج نے جمہوری حکومت کا ساتھ دیا تھا‘فوج کسی سیاسی سرگرمی میں شامل نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: