ایم کیو ایم پاکستان کے رکن اسمبلی ارتضیٰ فاروقی پی ایس پی میں شامل

کراچی: متحدہ قومی موومنٹ پاکستان (ایم کیوایم) کے رکن سندھ اسمبلی ارتضیٰ خلیل فاروقی نے پاکستان سرزمین پارٹی (پی ایس پی) میں شمولیت کا اعلان کردیا۔

کراچی پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس کے دوران پی ایس پی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے ارتضیٰ فاروقی کو خوش آمدید کہا۔ ارتضیٰ خلیل فاروقی 2013 کے عام انتخابات میں ایم کیو ایم کے ٹکٹ پر پی ایس 119 کراچی سے سندھ اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے تھے۔

واضح رہے کہ مارچ 2016 میں مصطفیٰ کمال کی جانب سے ایم کیو ایم سے علیحدگی، الطاف حسین پر ’را‘ کے ایجنٹ کے الزامات اور اپنی الگ جماعت پاک سرزمین پارٹی (پی ایس پی) بنانے کے بعد سے ارتضیٰ فاروقی بیرون ملک تھے۔

ایک سال سے یہ رپورٹس سامنے آ رہی تھیں کہ ایم کیو ایم کے رکن سندھ اسمبلی ارتضیٰ فاروقی پی ایس پی میں شامل ہو جائیں گے۔

اس موقع پر مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ ہم نے کسی پر اپنی رائے مسلط نہیں کی اور گزشتہ ایک سال کے دوران ہماری تحریک میں ایک پتہ بھی نہیں ٹوٹا’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘ہم اس لیے جدوجہد نہیں کررہے ہیں کہ مجھے یا انیس قائم خانی کو وزیراعظم بنائیا جائے بلکہ لوگوں کے لیے جدوجہد کررہے ہیں’۔

سابق سٹی ناظم نے کہا کہ ‘کراچی میں کمرشلائزیشن کے نام پر کراچی کو نقصان پہنچایا جارہا ہے، اگر عمارتیں اسی طرح بنتی رہیں تو کراچی رہنے کے قابل بھی نہیں رہے گا’۔

انھوں نے کہا کہ ‘پورے پاکستان کے لوگوں کا کراچی پر حق ہے، پنجاب ، بلوچستان اور خیبرپختونخوا کے لوگوں کے لیے بھی جدوجہد کریں گے’۔

کراچی میں ترقیاتی کاموں کی سست روی پر تنقید کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ‘ماس ٹرانزٹ پروجیکٹ پر کام نہ ہونے کے برابر ہے’۔

انھوں نے کہا کہ ‘ کروڑوں لوگ پانی کی لائنوں سے محروم ہیں، کراچی میں فوری طور پر50 فیصد علاقوں میں پانی کی لائنیں بچھائی جائیں اور کراچی کے لیے پانی کے نئے کوٹے کا اجرا کیا جائے’۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: