شرجیل میمن لڑکی کے ساتھ مبینہ زیادتی میں ملوث

پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنماءشرجیل میمن کا ایک شرمناک اسکینڈل منظر عام ہے جس میں وہ اندرون سندھ کی ایک دوشیزہ کو نوکری کا جھانسہ دے کر اسکی عزت کے ساتھ کھیلتے رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے معتبر خبر رساں ادارے “روزنامہ پاکستان” نے خبر شائع کی ہے کہ سوشل میڈیا دادو کی متاثرہ لڑکی پارس عباسی کی آواز بن گیا اور میرفہدگبول نامی صارف نےاس لڑکی کیساتھ پیش آنیوالے واقعے کے بارے میں بتاتے ہوئے کہاکہ یہ دوشیزہ انصاف کی متلاشی ہے ، یہ لڑکی سیاستدان کی بھینٹ چڑھنے والی لڑکیوں میں سے ایک ہے جبکہ کئی دیگر زندگیوں کو لاحق خطرات کی وجہ سے وہ بولتی ہی نہیں ہیں۔۔

صارف کا کہنا تھا کہ میڈیا کو بھی متاثرہ لڑکی سے بات کرنی چاہیے ، ہم اکیسویں صدی میں رہ رہے ہیں لیکن ابھی بھی پاکستان میں ایس جیسے شرمناک کام ہو رہے ہیں جنہیں روکنے والا شاید کوئی نہیں ہے۔

انہوں نے ٹوئٹ میں کہا ہے کہ جولائی 2015ءسے قبل متاثرہ لڑکی نے سندھ حکومت کا ذمہ دارعہدیدار ہونے کی وجہ سے شرجیل میمن سے نوکری کیلئے رابطہ کیا جس نے نوکری دینے کے سبزباغ دکھاکر کئی بار جنسی درندگی کا نشانہ بنایا لیکن بعدازاں کئی مرتبہ سوشل میڈیا صارفین نے وزیراطلاعات شرجیل میمن سے اس ضمن میں ’اطلاع‘ چاہی لیکن انکی جانب سے ابھی تک کوئی جواب سامنے نہیں آیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں:

اپنا تبصرہ بھیجیں