پاکستانی تاریخ کی سب سے بڑی پلی بارگین آخری مراحل میں رک گئی، ملک ریاض‌ کے داماد کیا چاہتے ہیں؟

روالپنڈی: بحریہ آئی کون ٹاور کے مالک اور بزنس ٹائیکون ملک ریاض کے داماد زین ملک نے قومی احتساب بیورو کو 50 ارب پلی بارگین کی پیش کش کی جس پر کام جاری تھا البتہ اب ملکی تاریخ کی سب سے بڑی وصولی کا معاملہ رُک گیا ہے۔

اردو پوائنٹ کی رپورٹ کے مطابق نیب اور پاکستان کی تاریخ کی سے سے بڑی پلی بارگین اپنے آخری مراحل میں رک گئی، ملک ریاض کے داماد زین ملک نے نیب کو 4 مختلف کیسز میں پلی بارگین کی پیشکش کی تھی جن میں بحریہ آئی کون، پنک ریزیڈنسی، بحریہ ٹاون راولپنڈی اور گالف سٹی مری کیسز شامل تھے۔

ان تمام کیسز میں نیب اور زین ملک کی طویل عرصے تک ایک دوسرے سے بات چلی اور اب دونوں فریقین کی جانب سے اس عمل کو روک دیا گیا ہے۔ ملک ریاض کے داماد زین ملک چاہتے ہیں کہ پراپرٹی کی قیمت ڈپٹی کمشر کے مقرر کردہ ریٹس کے مطابق لگائے جائیں جبکہ نیب کا کہنا ہے کہ قیمت کا تعین مارکیٹ کی قیمت کے مطابق ہوگا۔

ہم نیوز چینل کے پروگرام بڑی بات ود عادل شہازیب کی ایک رپورٹ کے مطابق دونوں فریقین میں اس بات پر اکتفا نہ ہونے پر پلی بارگین کو روک دیا۔ ٹی وی ذرائع کا کہنا ہے کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ اگر قیمت کا تعین ڈی سی ریٹ پر کیا جائے گا تو قیمت چند ارب روپے ہو گی جبکہ اگر مارکیٹ کے مطابق قیمت کا تعین کیا جائے گا تو قیمت تقریباََ50 ارب کے قریب پہنچ جائے گی۔ اسی وجہ سے ملکی تاریخ کی سب سے بڑی پلی بارگین رک گئی ہے جس سے یقینی طور پر نیب کو بھی پریشانی کاسامنا ہو گی۔

یاد رہے کہ پلی بارگین کی پیشکش ملک ریاض کے داماد زین ملک نے کی تھی جس کے بعد 4 کیسز میں ان کے اور نیب کے درمیان پلی بارگین ہونی تھی۔جن کیسز میں پلی بارگین کی درخواست کی گئی تھیں ان میں بحریہ آئیکون، پنک ریزیڈنسی، بحریہ ٹاون راولپنڈی اور گالف سٹی مری سے متعلق ہیں۔لیکن اب نیب اور زین ملک کے مابین قیمت کے تعین کے طریقہ کار کی وجہ سے پلی بارگین روک دی گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: