سعودی عرب میں فوج کے ذریعے بغاوت کی جا سکتی ہے

سعودی عرب میں فوج کے ذریعے بغاوت کی جا سکتی ہے

محمد بن سلمان کو شہزادہ محمد بن نائف اور احمد بن عبدالعزیز سے خطرہ ہے ، سی آئی اے کے سابق عہدیداروں نے محمد بن سلمان کیخلاف سازش میں محمد بن نائف کا ساتھ دیا

سینئر تجزیہ کار مبشر لقمان نے کہا ہے کہ سعودی عرب میں فوج کے ذریعے سے بغاوت کی جا سکتی ہے۔ سعودی علی عہد کو صرف دو افراد سے خطرہ ہے ۔ جس میں احمد بن عبدالعزیز اور محمد بن نائف شامل ہیں۔ ان دونوں کے پاس طاقت بھی ہے اور پیسہ بھی ۔ محمد بن سلمان بھی ان دو شاہی افراد سے خطرہ محسوس کرتے ہیں۔ روس کے ساتھ تیل کی قیمتوں پر جنگ کا اعلان کیا ،جس کے باعث پٹرول کی قیمت بھی کم ہو گئی۔

سعودی حکومت کو گرانے کے لئے شہزادہ محمد بن نائف کا سی آئی اے کے سابق عہدیداروں نے ساتھ دیا۔ مبشر لقمان نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ شہزادہ محمد بن نائف کوملک کے اندر اور باہر بہت سے طاقتور افراد کی حمایت حاصل ہے۔ جبکہ سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کو بہت سی قوتیں پسند نہیں کرتی ۔

اس سے قبل صابر شاکر دعویٰ کرچکے ہیں کہ سعودی حکومت نے ممکنہ بغاوت کے پیش نظر حرم اور مسجد نبوی کو بند کیا کیونکہ شاہی خاندان میں پھوٹ پڑ گئی اور شاہ سلمان اگلے سربراہ بننے کی کوشش میں ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: