داعش کے لیے کام کرنے والی پنجاب یونیورسٹی کی پروفیسر گرفتار

کراچی میں حساس اداروں نے کارروائی کرتے ہوئے داعش کے مبینہ رابطہ کار گروپ کو گرفتار کرلیا گرفتار ملزمان میں لاہور یونیورسٹی کے پروفیسر اور خاتون بھی شامل ہیں‌

ذرائع کے مطابق گرفتار خاتون پروفیسر کی قریبی عزیز ہیں‌ملزمان کا داعش ارکان سے مبینہ رابطوں کا انکشاف ہوا ہے سی ٹی ڈی ذرائع کے مطابق ملزمان پر چھوٹے ڈرانز سے ٹارگٹڈ بم حملوں کی منصوبہ بندی کا الزام ہے جبکہ تقریبات کی کوریج میں‌استعمال ہونے والے ٍڈرانز سے بم حملے کرتے تھے خفیہ اطلاعات پر کی گئی کارروائی میں ملزمان کے دیگر ساتھیوں کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جن کے قبضے سے حساس تنصیبات کے نقشے بھی برآمد کئے گئے ہیں۔

سی ٹی ڈی ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزمان کو تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے اور دوران تفتیش اُن سے اہم معلومات ملنے کا قوی امکان ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: