سعودی شہزادہ 5 بیویاں 350 ملین ڈالرجوئے میں‌ ہارگیا

ریاض: سعودی عرب کے شہزادے عیاشی اور دولت لٹانے میں‌ شہرت رکھتے ہیں ان کا ایک اور شرمناک کارنامہ سامنے آگیا ہے۔ شہزادہ ماجد بن عبداللہ بن عبدالعزیز آل سعود دنیا بھر میں‌ جوئے اور منشیات کی وجہ سے مشہور ہے۔ لیکن مصر میں‌ ماہ رمضان کے مقدس ترین مہینہ میں‌ اس شہزادہ نے ایک اور بدنما تاریخ رقم کر دی ہے۔

مصر کے معروف سنائی گرینڈ کسینو میں‌ صرف 6 گھنٹے میں‌ نا صرف 350 ملین ڈالرز جوئے میں‌ ہارا بلکہ اپنی 9 خوبرو بیگمات میں سے 5 بیگمات جوئے میں‌ ہار گیا۔ کسینیو کے منیجر کا کہنا ہے کہ شہزادہ پرنس جب اپنے سارے پیسے ہار گیا تو اس نے اپنی 5 بیویوں کے بدلے ڈھائی کروڑ ڈالر لیے لیکن وہ یہ بھی ایک ہی ٹیبل پر ہار گیا۔

شکست کے بعد وہ اپنی بیگمات سے ملے بغیر انہیں چھوڑ کر کسینو سے چلاگیا، منیجر کے مطابق جوا کھیلنے والے اکثر ہار کی صورت اپنے جانور اونٹ اور گھوڑے گروی رکھتے ہیں‌ اور پھر پیسے دے کر انہیں‌ لے جاتے ہیں‌ لیکن کسینو کی تاریخ میں‌ ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ کسی نے اپنی خوبصورت بیویاں چھوڑ دیں اور پلٹ کر انہیں‌ پوچھنا بھی گوارا نہیں کیا۔

جوئے میں‌ ہاری گئی شہزادے کی بیگمات نے کسینو اور مصر کی حکومت کو بھی مشکل میں‌ ڈال دیا ہے، چار روز گزرنے کے باوجود شہزادے کی بیگمات کی قسمت کا فیصلہ نہیں‌ ہو سکا. ایسی صورت حال میں‌. کسینو کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے والے کہتے ہیں‌ شاید آل سعود خاندان کے دیگر افراد شہزادہ ماجد کی بیگمات کو خرید کو واپس لے جائیں اگر ایسا نا ہوا تو انہیں‌ یمن اور قطر میں بولی لگا کو بیچا جا سکتا ہے۔

مصر کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے جیسے ہی سعودی عورتوں کا شوہر قرضہ واپس کرے گا تو اس کی بیگمات کی واپسی میں‌ ہر ممکن مدد فراہم کی جائے گی، 2015 میں بھی یہی سعودی شہزادہ اپنے ملازم کو غیراخلافی حرکتوں‌ کے لیے حراساں کرنے کی وجہ سے بدنام ہوا تھا۔ لیکن لاس اینجلس کی عدالت نے دباؤ کی وجہ سے مقدمہ چلائے بغیر امریکا چھوڑنے کی اجازت دے دی تھی ،، لیکن اس مرتبہ بگڑا ہوا شہزادہ رہی سہی اخلاقیات اور پیسہ سب ہی کچھ جوئے میں‌ ہار چکا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں: