کراچی:‌ کرونا سے مرنے والوں کی تدفین کے لیے 5 قبرستان مختص، دیدار کی اجازت نہیں‌ ہوگی، دو ٹوک فیصلہ

کراچی:‌ کرونا سے مرنے والوں کی تدفین کے لیے 5 قبرستان مختص، دیدار کی اجازت نہیں‌ ہوگی، دو ٹوک فیصلہ

کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز اور اموات کے پیش نظر کراچی میں وائرس کا شکار ہو کر مرنے والوں کی تدفین کے لیے پانچ قبرستان مختص کرنے کا اعلان کردیا گیا۔

میئر کراچی وسیم اختر کی سربراہی میں ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں کرونا وائرس سے مرنے والوں کی تدفین سمیت متعدد اہم معاملات زیر غور آئے۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ کرونا وائرس سے جاں بحق ہونے والوں کی شہر کے پانچ قبرستانوں میں تدفین کی جائے گی۔

میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ کرونا وائرس سے جاں بحق ہونے والے افراد کی محمد شاہ قبرستان، سرجانی قبرستان، مواچھ گوٹھ قبرستان، کورنگی نمبر 6 اور اورنگی ٹاؤن گلشنِِ ضیا میں تدفین کی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ وائرس کے پیش نظر تدفین کے لیے آنے والی میت کو حفاظتی انتظامات کے ساتھ لایا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ تدفین کے لیے جنازے کے ساتھ صرف چند قریبی رشتہ دار ہی شامل ہو سکیں گے جبکہ قبرستان میں میت کے آخری دیدار کی اجازت نہیں ہو گی۔ وسیم اختر نے بتایا کہ ریٹائرڈ ملازمین کی پینشن ادا کی جا چکی ہے جبکہ حکومت سندھ سے گرانٹ ملتے ہی کے ایم سی ملازمین کی تنخواہیں کو بھی ادائیگیاں کردی جائیں گی۔ انہوں نے واضح کیا کہ کورونا وائرس کے حوالے سے کے ایم سی کے متعلقہ محکمے اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں اور دیگر ضروری محکموں فائر بریگیڈ، ریسکیو یونٹ اور سٹی وارڈنز کو بھی فعال رکھا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں: